چیف جسٹس مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ کی سربراہی میں بین الاقوامی ڈونرز کا لاہور ہائی کورٹ میں اجلاس

چیف جسٹس مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ کی سربراہی میں بین الاقوامی ڈونرز کا ...
چیف جسٹس مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ کی سربراہی میں بین الاقوامی ڈونرز کا لاہور ہائی کورٹ میں اجلاس

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ کی سربراہی میں بین الاقوامی ڈونرز کا اجلاس لاہور ہائی کورٹ کے نئے لائبریری ہال میں منعقد ہوا، جس میں برطانوی ہائی کمیشن، یورپین یونین،ورلڈ بنک، ایشیائی ترقیاتی بنک سمیت دیگر ڈونرزکے نمائندوں نے شرکت کی۔

مسلم لیگ(ن) کے مخالف میڈیا ہاﺅسز پر حملے نہ کریں ، کردار کشی ہماری روایت نہیں، مریم نوازکا کارکنوں کے نام پیغام

رجسٹرار سید خورشید انور رضوی، ڈی جی ڈسٹرکٹ جوڈیشری محمد اکمل خان اور ڈی جی پنجاب جوڈیشل اکیڈمی ماہ رخ عزیز سمیت ڈائریکٹوریٹ آف ڈسٹرکٹ جوڈیشری اور عدالت عالیہ ریسرچ سیل کے افسران بھی موجود تھے۔ اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ صوبائی عدلیہ میں اصلاحاتی عمل اور ججز و سٹاف کی استعداد کار بڑھانے کے لئے تمام ڈونرز کی مدد کا شکریہ ادا کرتے ہیں، انہوںنے کہا کہ تمام ڈونرز کے مشترکہ عمل سے صوبہ کی عوام کو جلد اور معیاری انصاف کی فراہمی ممکن بنائی جا رہی ہے، جس سے ان کا عدلیہ پر اعتماد مزید مستحکم ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا عدالت عالیہ، ضلعی عدلیہ، پنجاب جوڈیشل اکیڈمی اور ان کی انتظامیہ جوڈیشل سیکٹرکے مرکزی جز ہیں جس میں اصلاحات لانا وقت کا اہم تقاضا ہے۔ فاضل چیف جسٹس نے کہا کیس مینجمنٹ سسٹم صوبائی عدلیہ میں انقلابی حیثیت کا حامل ہے ، ان کا مزید کہنا تھا کہ مصالحتی مراکز کے قیام سے لوگوں کے پرانے مقدمات کو جلد نمٹایا جارہاہے جس سے سائلین کو ریلیف مل رہا ہے اور ان تمام ریفارمز کا مقصد نظام انصاف کے مرکزی سٹیک ہولڈر عام آدمی کی زندگی کو آسان بنانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کو بھی جدید خطوط پر استوار کیا گیا ہے اور اب ہم جوڈیشل اکیڈمی کو جوڈیشل یونیورسٹی بنانا چاہتے ہیں جو پنجاب میں لیگل ایجوکیشن کا مرکز ہوگی۔ فاضل چیف جسٹس نے پنجاب کے عدالتی نظام میں بامعنی اور پائیدار تبدیلی لانے کےلئے تمام ڈونرز کے نمائندوںکی خدمات کو سراہا۔ قبل ازیں شرکاءکو پنجاب میں جاری عدالتی اصلاحات کے مختلف پروگرامز بشمول آئی ٹی انٹرپرائز سسٹم، کیس فلو مینجمنٹ، کورٹ آٹومیشن، جینڈر ڈائیورسٹی، جوڈیشل ایجوکیشن اور اے ڈی آر وغیرہ کے متعلق بریفنگ بھی دی۔

مزید : لاہور