ہائیکورٹ نے ڈاکٹر اقرار کو زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے قائم مقام وائس چانسلر کے طو رپرکام کرنے سے روک دیا

ہائیکورٹ نے ڈاکٹر اقرار کو زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے قائم مقام وائس چانسلر ...
ہائیکورٹ نے ڈاکٹر اقرار کو زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے قائم مقام وائس چانسلر کے طو رپرکام کرنے سے روک دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے ڈاکٹر اقرار کو زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے قائم مقام وائس چانسلر کے طو رپرکام کرنے سے روک دیاہے جبکہ پرو وائس چانسلر ڈاکٹر ظفر اقبال کو یونیورسٹی کے امور چلانے کی ہدایت کردی۔

نواز شریف جس کے کندھے پر ہاتھ رکھیں گے وہ وزیر اعظم بنے گا :خواجہ سعد رفیق

چیف جسٹس سید منصور علی شاہ نے یہ عبوری حکم ڈاکٹر سرور کی درخواست پر جاری کیا ہے ، درخواست گزار کے وکیل احسن بھون نے موقف اختیار کیا کہ قانون کے مطابق ڈاکٹر اقرار کو قائم مقام وائس چانسلر تعینات نہیں کیا جا سکتا، مستقل وائس چانسلر نہ ہو تو پرو وائس چانسلر یونیورسٹی کے امور سنبھالے گا، پرو وائس چانسلر کی موجودگی میں قائم مقام وائس چانسلرتعیناتی نہیں ہو سکتی، ڈاکٹر اقرار پہلے بھی دو مرتبہ وائس چانسلر رہ چکے ہیں، زرعی یونیورسٹی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ چانسلر یونیورسٹی کے پاس اختیار ہے کہ وہ کسی کو بھی یونیورسٹی کے امور سنبھالنے کا کہہ سکتا ہے تاہم درخواست گزار کے وکلاءنے کہا کہ ایسا اس صورت میں ہو سکتا ہے جب پرو وائس چانسلر موجود نہ ہو، عدالت نے دلائل سننے کے بعد عبوری حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے ڈاکٹر اقرار کو قائم مقام وائس چانسلر کام کرنے سے روک دیا اور پرو وائس چانسلر ڈاکٹر ظفر کو یونیورسٹی کے امور چلانے کی ہدایت کر دی، عدالت نے ریمارکس دیئے کہ قائم مقام وائس چانسلر ڈاکٹر اقرار یونیورسٹی کے سنڈیکیٹ اجلاس کی صدارت کر سکتے ہیں اور نہ ہی کوئی اہم انتظامی فیصلہ کر سکتے ہیں، عدالت نے چانسلر یونیورسٹی گورنر پنجاب کو ہدایت کی کہ وہ ایک ہفتے میں زرعی یونیورسٹی میں وائس چانسلر کی تعیناتی یا پرو وائس چانسلر کو عبوری چارج دینے کے معاملے کا فیصلہ کریں، عدالت نے مزید سماعت ایک ہفتے تک ملتوی کر دی۔

مزید : لاہور