وکلاءپر عائد پروفیشنل ٹیکس کی وصولی روکنے کے حکم میں 26اگست تک توسیع

وکلاءپر عائد پروفیشنل ٹیکس کی وصولی روکنے کے حکم میں 26اگست تک توسیع
وکلاءپر عائد پروفیشنل ٹیکس کی وصولی روکنے کے حکم میں 26اگست تک توسیع

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے وکلاءپر عائد کئے گئے پروفیشنل ٹیکس کی وصولی روکنے کے حکم امتناعی میں 26اگست تک توسیع کرتے ہوئے فریقین کے وکلاءکو بحث کے لئے طلب کر لیاہے۔

ہائیکورٹ نے ڈاکٹر اقرار کو زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے قائم مقام وائس چانسلر کے طو رپرکام کرنے سے روک دیا

درخواست گزار کے وکلاءکی طرف سے موقف اختیا رکیا گیا کہ وکلاءاپنی آمدنی پر پہلے ہی ٹیکس ادا کر رہے ہیں مگر حکومت کی جانب سے ان پر پروفیشنل ٹیکس عائد کر دیا گیا جو کہ قوانین کی واضح خلاف ورزی ہے۔انہوں نے بتایا کہ قوانین کے تحت ایک ٹیکس کی موجودگی میں دوسرا ٹیکس عائد نہیں کیا جا سکتا ،عدالت وکلاءپر عائد کئے گئے پروفیشنل ٹیکس کو کالعدم قراردے۔پنجاب ریونیو اتھارٹی کے وکیل ملک اویس خالد نے موقف اختیارکیا کہ پروفیشنل ٹیکس کی وصولی کے حوالے سے جاری شیڈول کے مطابق ہی ٹیکس نوٹس بھجوائے گئے ہیں جس پرعدالت نے پہلے سے جاری حکم امتناعی میں 26اگست تک توسیع کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت ملتوی کر دی۔

مزید : لاہور