لاہورویسٹ مینجمنٹ کمپنی میں جونیئر افسروں کو غیر قانونی ترقیاں دینے کا انکشاف

لاہورویسٹ مینجمنٹ کمپنی میں جونیئر افسروں کو غیر قانونی ترقیاں دینے کا ...

لاہور (جاوید اقبال)لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی میں جونیئر افسروں کو بڑے عہدوں پر غیر قانونی طور پر ترقیاں دینے کا انکشاف ہوا ہے ۔ جس کے باعث کمپنی کے 100سے زائد افسرون اور ملازمین کو رواں سال کے دوران سالانہ انکریمنٹس نہیں مل سکی اور ان کا کیس سرد خانے میں چلا گیا ہے ۔کمپنی کے سابق وائس چیئرمین خواجہ عمران نذیر نے غیر قانونی ترقیوں کا نوٹس لیتے ہوئے اسسٹنٹ مینجر سے سینئیر مینجر ز کی ترقیاں منسوخ کرنے کا حکم دیا اور اس کے لیئے انکوائری کمیٹی بنا دی ۔کمیٹی نے کیس سرد خانے میں ڈالا تو موجودہ چیئرمین ڈی سی لاہور کیپٹن انوارالحق نے بھی اس کا نوٹس لے لیا اور معین عارفین کو نیا ء انکواری افسر مقرر کیا ہے جنھوں نے انکوائری شروع کر دی ہے ۔ بتایا گیا ہے کہ سابق ایم ڈی نے جونیئر ترین اسسٹنٹ مینجرز غلام مرتضی ،محمد زاہد،عثمان نثار،منیب فاروق کوقوانین کو پس پشت ڈال کر سینئیر مینجروں کے عہدوں پر ترقیا ں دی گئیں اور انھیں بھاری تنخواہوں ،کئی کئی سولیٹر پیٹرول ،نئی گاڑیوں اور پرکشش سیٹوں پر تعینات کر دیا ۔انکوائری افسر معین عارفین سے بات کی گئی تو انھوں نے کہا کہ انکوائری شروع کر دی گئی ہے ۔اگر ترقیاں غیر قانونی ہوئی ہیں تو واپس کرائیں گے جلد رپورٹ ڈی سی لاہور کو پیش کر دوں گا۔

ویسٹ مینجمنٹ

مزید : میٹروپولیٹن 1