یونیورسٹی آفسرگودھا کے طلبہ کا سپریم کورٹ رجسٹری کے باہر احتجاج

یونیورسٹی آفسرگودھا کے طلبہ کا سپریم کورٹ رجسٹری کے باہر احتجاج

لاہور(پ۔ر)یونیورسٹی آف سرگودھا لاہور کیمپس کے سینکڑوں طلباء و طالبات سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس سپریم کورٹ کی متوقع آمد کا انتظار کرتے رہے سٹوڈنٹس نے سرگودھا یونیورسٹی انتظامیہ کیخلاف بینرز اٹھائے ہوئے تھے اور وہ کنٹرولر امتحانات اور وائس چانسلر کیخلاف سخت نعر ہ بازی کرتے ہوئے رزلٹ کا رڈ کے اجراء کے لئے نعرے لگاتے رہے۔انہوں نے رجسٹری میں رزلٹ کا رڈز کے اجراء کے لئے عرضداشت بھی پیش کی۔احتجاجی طلباء و طالبات نے بتایا کے انہوں نے لاہور کیمپس جو یونیورسٹی آف سرگودھا کا سب کیمپس ہے سے کئی ماہ پہلے اپنی ڈگری مکمل کی لیکن یونیورسٹی آف سرگودھا انہیں رزلٹ کارڈز جاری کرنے میں جرم کی حد تک تاخیر کر چکی ہے۔انہوں نے بتایا کے جس د ن سے نئے کنٹرولر امتحانات نے چارج لیا ہے کسی طالبعلم کا رزلٹ کا جاری نہیں کیاگیاجبکہ اس سے پہلے کنٹرولرز نے رزلٹ کا رڈز کے اجراء میں کبھی تاخیر نہیں کی مزید معلوم ہوا کے یونیورسٹی نے تمام سب کیمپسز کے (یونیورسٹی شیئر)5فیصد سے اچانک 25فیصد کی وصولی کو بنیاد بنا کر تمام پانچوں سب کیمپسز کے سٹوڈنٹس کے رزلٹ کارڈ روک لئے اور ان مالی معاملات کو وجہ عناد بناکر سٹوڈنٹس کو اس کی بھینٹ چڑھا دیاجو سراسرناانصافی اور ظلم ہے۔سٹوڈنٹس نے چیف جسٹس سپریم کورٹ سے اپیل کی کہ ان کے رزلٹ کا رڈ زجلدازجلد جاری کرواکر تاخیر کے ذمہ داران کو سزا دی جائے ۔

یونیورسٹی

مزید : میٹروپولیٹن 1