ہارورڈ کینیڈی سکول امریکہ اورپنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کے مابینمعاہدہ

ہارورڈ کینیڈی سکول امریکہ اورپنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کے مابینمعاہدہ

لاہور(سٹی رپورٹر )ہارورڈ کینیڈی سکول امریکہ اورپنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کے مابین مشترکہ تحقیق کیلئے مفاہمتی یادداشت پر دستخط ہو گئے ۔ سینٹر فار اکنامک ریسرچ پاکستان بھی اس مشترکہ تحقیق کے منصوبے میں معاونت کرے گا۔ مفاہمتی یادداشت پر دستخط کی تقریب پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی ہیڈکوارٹر میں منعقد ہوئی جہاں چیف آپریٹنگ آفیسر اکبر ناصر خان اور سینٹر فار اکنامک ریسرچ پاکستان کے بورڈ ممبر ڈاکٹر علی چیمہ نے دستخط کیے۔ اس موقع پرپروفیسرہارورڈسکول ڈاکٹر عاصم خواجہ،ریسرچ مینیجر ہارورڈ کینیڈی سکول مس فے ٹیریٹ اور ریسرچ فیلو مس جولیا لیڈکس بھی موجود تھیں۔ ’’اسٹیٹ اتھارٹی پراجیکٹ‘‘ نامی تحقیقی منصوبے کا باقاعدہ آغاز رواں ہفتے ہو گا جس میں شہریوں کی15ہیلپ لائن پر شکایا ت اور اب پر پولیس اورقانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کے رسپانس کا جائزہ لیا جائے گا۔

ہارورڈ کینیڈی سکول اورسینٹر فار اکنامک ریسرچ پاکستان کی ٹیم سیف سٹیز ہیڈکوارٹر میں ہی اس ریسرچ منصوبے پر کام کرے گی جس کے دوران شہریوں سے براہ راست رابطہ کر کے ان کی شکایات پر ہونے والے ایکشن بارے آراء لی جائیں گی۔ چیف آپریٹنگ آفیسر پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی اکبر ناصر خان نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ اس تحقیقی منصوبے کا مقصد قانون نافذ کرنے والے اداروں پر عوامی اعتماد میں اضافہ کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیف سٹیز اتھارٹی شہریوں کے جان و مال کے تحفظ اور ٹریفک مسائل کے حل کیلئے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو مکمل راہنمائی اور امداد کر رہی ہے جس کے مثبت نتائج برآمد ہو رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ اس تحقیقی منصوبے کے ذریعے بھی پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارکردگی میں بہتری کی راہ ہموار ہو گی۔ تقریب کے بعد ریسرچ سکالر ز کے 6رکنی وفدکو پنجاب پولیس انٹیگریٹڈ کمانڈ کنٹرول اینڈ کمیونیکیشن سینٹر کے مختلف شعبہ جات کا دورہ کروایا گیا۔انہیںآپریشنز اینڈ مانیٹرنگ سینٹر،ایڈوانس ٹریفک مینجمنٹ سسٹم اور ایمرجنسی رسپانس بارے بریفنگ دی گئی۔ وفد کو 15 ایمرجنسی ہیلپ لائن، فیشل رکگنایزیشن ٹیکنالوجی، اے این پی آر کیمروں بارے بھی بتایا گیا۔ اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے وفد کے شرکاء کا کہنا تھا کہ مختصر عرصے میں سیف سٹیز اتھارٹی نے نمایاں کامیابیاں حاصل کی ہیں جو کہ خوش آئند ہے اور اس جدید منصوبے سے پنجاب میں کرائم کنٹرول میں بھرپور مدد ملے گی۔ ہارورڈ سکالرزکا کہنا تھا کہ ریسرچ پراجیکٹ سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارکردگی میں بہتری آئے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4