جسٹس شمس محمود کی نواز شریف ، مریم اور صفدر کی سزاؤں کیخلاف کیس سننے سے معذرت

جسٹس شمس محمود کی نواز شریف ، مریم اور صفدر کی سزاؤں کیخلاف کیس سننے سے معذرت

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس شمس محمود مرزا نے سابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف ،ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر)محمد صفدر کی سزاؤں کے خلاف دائر درخواست کی سماعت سے معذرت کرلی ،جس کے بعد اس کیس کی سماعت کرنے والا 3رکنی فل بنچ ٹوٹ گیا،بنچ کے دیگر ارکان میں مسٹر جسٹس ساجد محمود سیٹھی اور مسٹر جسٹس مجاہد مستقیم احمد شامل تھے۔جسٹس شمس محمود مرزا کی طرف سے سماعت سے انکا رکے بعد کیس کی فائل چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کو بھجوا دی گئی ہے جو اس درخواست کی سماعت کے لئے نیا فل بنچ تشکیل دیں گے ۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ 18ویں آئینی ترمیم کے بعد نیب آرڈیننس ختم ہوچکا ہے ،آئین میں اس قانون کو تحفظ نہیں دیا گیا،یہ ایک مردہ قانون ہے جس کے تحت کوئی کارروائی ہوسکتی ہے اور نہ ہی کسی کو سزا دی جاسکتی ہے۔بنیادی درخواست میں نیب کے قانون اور اس کے تحت ہونے والی کارروائیوں کو کالعدم کرنے کی استدعا کی گئی ہے جبکہ متفرق درخواست میں میاں محمد نواز شریف ،مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی سزاؤں کو کالعدم کرنے کی استدعا کی گئی ہے ۔سنگل بنچ نے اس کیس کی سماعت کے لئے لارجر بنچ بنانے کی سفارش کی تھی جس کے بعد مذکورہ 3رکنی فل بنچ تشکیل دیا گیا جس کے روبرو کیس کی پہلی سماعت کے موقع پر ہی جسٹس شمس محمود مرزا نے سماعت سے معذرت کرلی ۔

جج کی معذرت

مزید : صفحہ آخر