قومی اسمبلی کا اجلاس12سے14اگست کے درمیان بلانے کیلئے سمری ارسال کر دی، بیر سٹر علی ظفر

قومی اسمبلی کا اجلاس12سے14اگست کے درمیان بلانے کیلئے سمری ارسال کر دی، بیر سٹر ...

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) نگران وزیر اطلاعات بیرسٹر علی ظفر نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن نے ایک انکوائری بنائی ہے اس پر وزارت قانون نظر ثانی کررہی ہے،الیکشن کمیشن نے جو بیانیہ دیا ہے اس کے مطابق انتخابات کے دوران آر ٹی ایس سسٹم کی خرابی بتائی گئی ۔ بیرسٹر علی ظفر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ قومی اسمبلی کا اجلاس 12سے14اگست کے درمیان بلانے کیلئے سمری بھیجی جا چکی ہے، اجلاس میں نومنتخب ارکان اسمبلی حلف اٹھائیں گے، حلف برداری کے بعد سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کا انتخاب ہوگا اور پھرقائد ایوان کا انتخاب بھی کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا آئین کے تحت 15اگست سے پہلے اسمبلی اجلاس بلانا لازمی ہے ،الیکشن کمیشن کی طرف سے نوٹیفکیشن جاری ہونے کا انتظار تھا۔ انہوں نے کہا ہمارا کام تھا الیکشن کا انعقاد ہم نے اپنی ذمہ داری پوری کر دی،نئی حکومت اب اپنے معاملات سنبھال گی اور ہم اپنی ذمہ داریوں سے سبکدوش ہو جائے گے۔ انہوں نے کہا الیکشن کمیشن نے جو بیان دیا ہے اس کے مطابق آر ٹی ایس سسٹم کی خرابی تھی الیکشن کمیشن نے ایک انکوائری کمیٹی بنائی ہے اس پر وزارت قانون نظر ثانی کررہی ہے تاہم انکوائری کرنے سے پتہ چل جائے گا کہ الیکشن کے دوران آر ٹی ایس سسٹم میں کیا خرابی پیدا ہوئی تھی۔ انکوائری میں نظر ثانی کی جائے گی کہ آر ٹی ایس سسٹم میں کس طرح کی بہتری لائی جاسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ الیکشن ہوگیا اور نئی آنے والی حکومت کے پاس پانچ سال کا مینڈیٹ ہے لہٰذا میری رائے ہے کہ آگے کا سوچنا چاہئے بہت سارے کام اور مسائل حل کرنے ہیں۔

بیرسٹر علی ظفر

مزید : صفحہ آخر