خیبرپختونخوا کے نامزد وزیراعلی محمود خان اربوں روپے اثاثوں کے مالک نکلے

خیبرپختونخوا کے نامزد وزیراعلی محمود خان اربوں روپے اثاثوں کے مالک نکلے

پشاور(آن لائن)خیبرپختونخوا کے نامزد وزیراعلیٓ محمود خان 2ارب سے زائد اثاثوں، 87کنال زرعی اراضی اور 55کمرشل دکانوں کے مالک ہیں، بیگم کے پاس 35تولہ سونا بھی ہے ۔خیبر پختونخواہ کے نامزوزیراعلی محمود خان کے الیکشن کمیشن میں جمع کرائی گئی اثاثوں کی تفصیل کے مطابق وہ 2ارب روپے سے زائد اثاثہ جات کے مالک ہیں ،محمود خان 87کنال زرعی اراضی اور 55کمرشل دکانوں کے مالک ہیں ان کے گھر پر ڈیڑھ کروڑکی مالیت کا فرنیچر ہے جبکہ اہلیہ کے پاس 35تولہ سونے کا زیور ہے ۔ محمود خان کی سوانح عمری کے مطابق ان کا تعلق سوات کی تحصیل مٹہ سے ہے وہ 1972 کو ڈاکٹر محمدخان کے گھر پیدا ہوئے اورابتدائی تعلیم سوات کے علاقہ خوازہ خیلہ میں سرکاری سکول سے حاصل کی، میٹرک اور ایف ایس سی پشاور پبلک سکول سے مکمل کی جبکہ ایم ایس سی ایگر یکلچر کی ڈگری پشاور یونیورسٹی سے حاصل کی۔محمود خان 2008 کے بلدیاتی الیکشن میںآزاد حیثیت سے یونین کونسل ناظم یو سی خریڑئی منتخب ہوئے۔ ان کا خاندان پہلے پاکستان پیپلز پارٹی میں تھا لیکن 2012میں انہوں نے پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کر لی،2013 میں پی ٹی آئی کی نشست سے صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی کے 84 جو نئی مردم شماری میں پی کے9 بن گیا ہے، محمود خان 2013 کے دوران 2 ماہ کیلئے صوبائی وزیرداخلہ رہے، 2013 سے 2015 تک صوبائی وزیر محکمہ انہار راور پھر 2018تک وہ صوبائی وزیر کھیل وثقافت،سیاحت اور یوتھ آفیررہے۔ ان کا ایک بھائی عبداللہ تحصیل ناظم مٹہ ہے اور دوسرا بھائی احمد خان ضلعی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر ہے۔

اثاثوں کے مالک

B

مزید : صفحہ اول