صنعتی پلاٹوں کو کمرشل بنانے پر واٹر کمیشن کا اظہار برہمی، تفصیلات طلب

09 اگست 2018 (11:21)

کراچی ( ویب ڈیسک)واٹر کمیشن کے سربراہ جسٹس (ر) امیرہانی مسلم نے سائٹ ایریا میں 5 واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹس پر کام جلد مکمل کرنے کا حکم دیتے ہوئے ڈی جی سیپا سے تفصیلات طلب کرلیں۔

جنگ  کے مطابق بدھ کو سندھ واٹر کمیشن کے سربراہ جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم کی سربراہی میں اجلاس ہوا۔ اجلاس میں سیکرٹری انڈسٹریز، ایم ڈی سائیٹ، ایم ڈی پی این ڈی، ایم ڈی کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ ودیگر شریک ہوئے۔ کمیشن نے انڈسٹریل پلاٹوں کی حیثیت کمرشل بنیادوں پر منتقل کرنے پر برہمی کا اظہار کیا کمیشن نے ریمارکس میں کہاکہ کس قانون کے تحت انڈسٹریل پلاٹوں کو کمرشل پلاٹوں میں منتقل کیا جارہا ہے، ایم ڈی سائٹ نے بتایاکہ پلاٹوں کی منتقلی کا اختیار بورڈ کو ہے۔

کمیشن نے حکم دیا کہ اب تک کتنے انڈسٹریل پلاٹوں کی حیثیت کمرشل بنیادوں میں تبدیل کی گئی ہے مکمل تفصیلات پیش کی جائیں اور کمیشن نے سائٹ ایریا میں 5واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹس پر کام جلد مکمل کرنے کا بھی حکم دیا ۔کمیشن نے ڈی جی سیپا سے مختلف کمپنیوں کے ٹریٹمنٹ پلانٹس کیتفصیلات بھی طلب کرلیں کمیشن نےقراردیاکہ صوبے کی کمپنیوں نے اپنے ٹریٹمنٹ پلانٹس لگانے کی یقین دہانی کرائی تھی، کمیشن نے ڈی جی سیپاکو حکم دیا کہ بتایا جائے ٹریٹمنٹ پلانٹس کی تنصیبات پر کتنا کام ہوچکا ہے۔

کمیشن میں پیش کی گئی رپورٹ میں کہا گیا کہ نوری آباد کے لیے ٹریٹمنٹ پلانٹ کی تنصیب کے لیے پی سی ون منظور ہوچکا ہے،ستمبر تک نوری آباد میں ٹریٹمنٹ پلانٹ کام شروع کردیا جائے گا، کمیشن نے حیدرآباد میں ویسٹرن اور ناردرن ٹریٹمنٹ پلاٹنس لگانے کے لیے ٹینڈربھی جاری کرنے کی ہدایت کی ۔

مزیدخبریں