یکساں نظام تعلیم کے نفاذ کیلئے عملی اقدامات کررہے ہیں ‘ سرفراز ہمایوں

  یکساں نظام تعلیم کے نفاذ کیلئے عملی اقدامات کررہے ہیں ‘ سرفراز ہمایوں

  

ڈیرہ غازیخان ‘ کوٹ ادو ( سٹی رپورٹر ‘ تحصیل رپورٹر ) وزیراعلی پنجاب سردار عثمان احمد خان بزدار کی ہدایت پر ہائرایجوکیشن کی ٹیم نے تونسہ شریف کا دورہ کیا صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن پنجاب راجہ یاسر ہمایوں سرفراز نے کوٹ قیصرانی میں دانش سکول کے تعمیراتی کام کا جائزہ لیا اس موقع پر سیکریٹری ہائیر ایجوکیشن راحیل صدیقی، اسسٹنٹ کمشنر نوید حسین اور دیگر افسران ہمراہ تھے صوبائی وزیرہائرایجوکیشن نے کہا کہ(بقیہ نمبر57صفحہ7پر )

وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان احمد خان بزدار کی کوشش ہے کہ آئندہ سال دانش سکول میں کلاسز کا اجرا کیا جائے اور آج کے دورے کا مقصد بھی یہی ہے کہ تعمیراتی کام کو تیز کیا جائے انہوں نے ٹھیکیدار کو بلاکر کر تعمیراتی کام مکمل کرنے کے لیے باقاعدہ ٹائم لائن طلب کی کیں صوبائی وزیر ایجوکیشن نے کہا کہ تعمیراتی کام میں ناقص مٹیریل کا استعمال ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا صوبائی وزیر ہائیر ایجوکیشن پنجاب نے کہا کہ وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان احمد خان بزدار کی ہدایت پر تونسہ میں سٹیٹ آف دی آرٹ سکول کی عمارت تعمیر کی جائے گی جس پر اربوں روپے خرچ کیے جا رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ضلع میں دوسرا دانش سکول خطہ کےلئے تحفہ ثابت ہو گا ۔ دریں اثنا صوبائی وزیر برائے پنجاب ہائیر ایجوکیشن راجہ یاسر سرفراز ہمایوں نے کہا ہے کہ ہم اپنے منشور کے مطابق یکساں تعلیم نظام کے نافذ کےلئے عملی اقدامات کررہے ہیں ، ابتدائی طور پر سکول ایجوکیشن میں تبدیلی لا کر پہلے سال میٹرک اور انٹر میڈیٹ کی سطح پر رٹہ نظام کو ختم کر کے معروضی نظام کو متعارف کرارہے ہیں ، تاکہ تخلیقی صلاحیتوں میں نکھار آئے، اچھی لیڈر شپ پیدا ہو، تعلیمی نظام میں بتدریج تبدیلی لا کر معیاری تعلیم کو فروغ دیا جائے گا جس کو بین الاقوامی معیار کے مطابق بنایاجائے گا جس کےلئے ایک مربوط اور جاندار نظام بنایا جارہا ہے ، یہ بات انہوں نے پوسٹ گریجویٹ کالج مظفرگڑھ میں مقابلے کے امتحانات سی ایس ایس اور پی ایم ایس کی تیاری کےلئے سرکاری سطح پر اکیڈمی کے قیام کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی، اس موقع پر سیکرٹری ہائیر ایجو کیشن پنجاب راحیل احمد صدیقی ، ڈپٹی کمشنر مظفرگڑھ ڈاکٹر احتشام انور ، ڈی پی او صادق ڈوگر، ایم پی اے رضا بخاری، پرنسپل پروفیسر خلیل الرحمن فاروقی سمیت معززین علاقہ، پروفیسراورلیکچرار موجود تھے، صوبائی وزیر نے کہا کہ ڈویژن کی سطح پر بین الاقوامی معیار کی یونیورسٹیاں قائم کی جائیں گی اور تمام اضلاع میں ان کے کیمپس بنائے جائیں گے، ڈپٹی کمشنرڈاکٹر احتشام انو رنے کہا کہ ضلع مظفرگڑھ پنجاب کا دوسرا پسماندہ ضلع ہے اکیڈمی کے قیام کے مقصد طلباء وطالبات کو وہ ماحول فراہم کرنا ہے جس سے ان کی صلاحیتوں میں نکھار پیدا ہواو رو سول سروسز میں آکر اپنے علاقے اور عوام کی خدمت کرسکیں ، جہاں فیصلے کئے جاتے ہیں اگر ضلع کی نمائندگی ہوگی تو ضلع کےلئے بہتر فیصلے کئے جاسکیں گے جس سے ترقی کی راستے کھلیں گے ، انہوں نے بتایا کہ اکیڈمی میں ہر سال دو کورس کرائے جائیں گے ایک کورس 4ماہ کا ہوگا، شام کے اوقات میں کلاسیں لگائی جائیں گی ، اکیڈمی پوسٹ گریجویٹ کالج اور گرلز کالج کی پروفیسرز انگلش، سائنس، تاریخ اور اسلامیات پڑھائیں گے جبکہ ضلع مظفرگڑھ ، ملتان اور ڈیرہ غازی خان کے سی ایس ایس آفیسر خصوصی لیکچر دیا کریں گے ، ہر کورس کی فیس 15ہزار روپے مقرر کی گئی ہے، مطالعہ کےلئے جدی لائبریری بھی قائم کی گئی ہے، پرنسپل پروفیسر خلیل الرحمن فاروقی نے اپنی خطاب میں یہ اقدام ضلع کے طلباء و طالبات میں مستقبل کے ایک نئی نوید پیدا کرے گا، منزل کے حصول کےلئے تجربہ کار افسران کی راہنمائی ملے گی، تقریب میں اسسٹنٹ کمشنر محمد شعیب، سی ای او تعلیم مسعود ندیم، سی ای او صحت ڈاکٹر ضیاء الحسن، ایم ایس ڈاکٹر مہر اقبال، ملک خیر محمد بدھ، اجمل چانڈیہ ، شیخ عامر سلیم صوبائی جنرل سیکرٹری انجمن تاجران، رانا محمد افضل، افضل چوہان اور طلباء و طالبات کی کثیر تعداد موجود تھی ۔

یاسر سرفراز

مزید :

ملتان صفحہ آخر -