امریکہ میں پناہ لینے کیلئے میکسیکو سرحد پرمنتظر تارکین کی تعداد 40 ہو گئی

    امریکہ میں پناہ لینے کیلئے میکسیکو سرحد پرمنتظر تارکین کی تعداد 40 ہو گئی

  

واشنگٹن(اظہر زمان، بیوروچیف) میکسیکو سے منسلک جنوبی سرحد کے قریبی علاقے میں امریکہ میں داخل ہو کر پناہ لینے کے امیدواروں کی تعداد چالیس ہزار تک پہنچ گئی۔امریکی میڈیا رپورٹ کے مطابق ان میں ہسپانوی نسل کے جنوبی ممالک کے تارکین وطن کے علاوہ افریقہ سمیت دیگر علاقوں کے باشندے بھی شامل ہیں۔ انسانی سمگلنگ میں ملوث گروہ اپنے گاہکوں کو بتاتے ہیں امریکہ کے ہوائی اڈوں کے ذریعے داخلہ مشکل ہونے کے بعد مختلف طریقے سے میکسیکو کی سرحد سے امریکہ میں داخل ہونے کے امکانات زیادہ ہیں، ایک اطلاع کے مطابق افریقی ملک کیمرون میں جہاں فرانسیسی بولنے والے افراد کی حکومت ہے وہاں انگریزی بولنے والے باشندے ان کے ظلم سے تنگ آ کر میکسیکو پہنچ کر قسمت آزمائی کرنا چاہتے ہیں۔ امریکی امیگریشن حکام کا کہنا ہے گزشتہ 3ماہ میں میکسیکو سرحد سے داخل ہو کر پناہ کی درخواست دینے والوں کی تعداد 4800 سے بڑھ کر اب دس ہزار تک پہنچ گئی ہے، انکی درخواستیں امریکی عدالتوں میں زیر غور ہیں، میڈیا اطلاع کے مطابق وسطی امریکہ و دیگر ممالک سے میکسیکو پہنچنے والے افراد کی تعداد میں ڈرامائی اضافہ ہونے کے بعد 40ہزار ہو چکی ہے۔

تارکین تعداد

مزید :

صفحہ آخر -