مقبوضہ کشمیر میں بھارتی اقدام سے افغان امن کوششوں کو خطرہ ہوسکتا ہے،امریکی اخبار

  مقبوضہ کشمیر میں بھارتی اقدام سے افغان امن کوششوں کو خطرہ ہوسکتا ...

  

نیویارک (آ ئی این پی) امریکی اخبار وال سٹریٹ جرنل نے بھارتی اقدام کو افغان امن کوششوں کیلئے خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا عمران خان کا دورہ اور ٹرمپ کی پیشکش ممکنہ طور پر مودی کے کشمیر سے متعلق فیصلے کی وجہ بنا،تفصیلات کے مطابق امریکی اخباروال سٹریٹ جرنل نے آرٹیکل 370 کے خاتمے پر کہا کہ مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی اقدام سے افغان امن کوششوں کوخطرہ ہوسکتا ہے۔امریکی اخبار کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان کے کامیاب دورہ امریکا اورصدرٹرمپ کی ثالثی کی پیشکش کے بعد ممکنہ طور پر بھارتی وزیراعظم نے کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا قدم اٹھایا۔ مقبوضہ کشمیرکی صورتحال سے افغان امن معاہدے کے لئے امریکی کوششوں میں پیچیدگی آسکتی ہے، طالبان سے مذاکرات آخری مرحلے میں ہیں، اس موقع پر کشمیرکی حیثیت تبدیل کرنے سے پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہواہے۔دوسری طرف عا لمی میڈ یا نے بھا رت کی جا نب سے کشمیر کی خصو صی حیثیت کو ختم کر نے کے فیصلہ پر بھر پو ر رد عمل میں کہا ہے کہ بھارتی فوج نے کشمیر کی گلیوں غاضبانہ قبضہ کرلیا ہے، مقبوضہ کشمیر میں کئی دن سے کرفیو جاری ہے سیاسی قیادت کو نظر بند کردیا گیا ہے۔ جس کی وجہ سے شہری اپنے گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں، اشیائے ضرورت کی شدید قلت کی وجہ سے عوام شدید اذیت کا شکار ہیں۔ امریکہ کے معروف اخبار نیویارک ٹائمز نے بھی کشمیر کی خار دار تاروں کی تصاویر کے ساتھ خبر دی کہ بھارت نے زمین پر قبضہ کیااور کشمیریوں کو ان کی زمین سے بے دخل کرنے کا منصوبہ بنایا۔اپنی خبر میں مقبوضہ کشمیر کے آرٹیکل 370کی منسوخی کو خطرناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ بھارت کے اس اقدام سے بڑی تعداد میں خون خرابہ ہونے کا اندیشہ ہے جس کے لئے عالمی طاقتیں اکھٹے ہو کر اس بربریت کو روکنے میں اپنا کردار ادا کریں۔واشنگٹن پوسٹ نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ پاکستان نے مسئلہ کشمیر کی وجہ سے بھارت کے ساتھ اپنے سفارتی روابط محدود کردئیے ہیں۔واشنگٹن پوسٹ کا کہنا ہے کہ ہنگامی بنیادوں پر کشمیری عوام پر بھارتی تسلط کو روکنا ہوگا ورنہ خطے میں بدامنی پھیلے گیا۔الجزیرہ نے دہلی سے مقبوضہ وادی کشمیر میں بھارتی ہٹ دھرمی کی شدید مذمت کرتے ہوئے عالمی دنیا کو اپنا کردار ادا کرنے کا کہا۔ الجزیرہ اپنی رپورٹ میں کہا کہ پاکستان نے بھارتی جارحیت کے خلاف فیصلہ کرتے ہوئے بھارت کے ساتھ ثقافتی، سیاسی اور تجارتی تعلقات کو ختم کردیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ نئی دہلی میں بھارتی عوام کی طرف سے کشمیرمیں کئے جانے والے مظالم کے خلاف ریلی نکالی گئی جس میں میں جغرافیائی حدود میں خلاف ورزی پر حکومت مخالف نعرے بازی کی گئی۔برطانوی اخبار گارڈین نے اپنی رپورٹ میں مودی حکومت کو لتاڑتے ہوئے کہا کہ نیا بھارت بنانے کے لئے کشمیریوں کے ساتھ انسانیت سوز سلوک مودی کے پلان کا حصہ ہے۔ ٹائم میگزین نے کشمیر سے نکلنے والی ایک خاتون کی کہانی لکھی ہے جس میں انھوں نے بتایاکہ کس طرح بھارتی سرکار نے پوری وادی کو بند کردیا ہے۔ جہاں مشکل میں گھرے کشمیری عوام گھروں میں نظر بند ہوگئے ہیں، قیادت کو زبردستی گھروں میں بند کردیا گیا ہے اور مواصلات کے تمام راستے بند کرکے عوام کو معلومات سے بے خبر کردیا گیا ہے۔ٹیلی گراف نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ بھارت نے دنیا کے بہت گنجان آباد علاقے کی عوام کو اشتعال انگیزی کی طرف دھکیل دیا ہے، عوام میں بے پناہ غم و غصہ پایا جارہا ہے جس سے آئندہ دنوں میں کافی نقصان کا اندیشہ ہے۔

عالمی میڈیا

مزید :

صفحہ آخر -