قربانی کی کھالیں جمع کرنے کیلئے ضابطہ اخلاق جاری

  قربانی کی کھالیں جمع کرنے کیلئے ضابطہ اخلاق جاری

  

پشاور( سٹاف رپورٹر)محکمہ داخلہ، حکومت خیبر پختونخوا نے قربانی کی کھالیں جمع کرنے کے لئے ضابطہ اخلاق جاری کیا ہے ۔عیدالاضحٰی پر مختلف سیاسی و مذہبی جماعتیں، سماجی تنظیمیں، فلاحی ادارے اور دینی مدارس جو صوبہ خیبر پختونخوا میں قربانی کی زیادہ سے زیادہ کھالیں جمع کرنے کی کوشش کرتے ہیں اور کھالیں جمع کرنے والوں کے درمیان سخت مقابلے کی کیفیت پیدا ہوجاتی ہے جو بعض دفعہ تصادم کی شکل اختیار کر جاتی ہے اور بڑے پیمانے پرنقص امن کا خطرہ پیدا ہوجاتا ہے۔ لہٰذا حکومت خیبر پختونخوا نے مندرجہ ذیل ضابطہ اخلاق جاری کیا ہے۔کھالیں جمع کرنےکے لئے متعلقہ ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن / ڈسٹرکٹ پولیس سے اجازت لینی ہوگی۔صرف ان پارٹیوں، تنظیموں، فلاحی اداروں اور دینی مدارس کو کھالیں جمع کرنے کی اجازت دی جائے گی جوحکومتی اداروں کے ساتھ رجسٹرڈ ہیں اور ضابطہ اخلاق پر دستخط کریں گے اور سختی سے پابند رہیں گے۔کھالیں جمع کرنے کے لئے کیمپ لگانے کی اجازت نہیں ہوگی۔گاڑیوں پر لاو¿ڈ سپیکر لگا کر، جھنڈے لگاکر یا مساجد، مدرسوں اور دفاتر سے کسی قسم کا اعلان کرنےکی اجازت نہیں ہوگی۔اسی طرح پوسٹر یا بینر کے ذریعے کھالیں مانگنے کی اجازت نہیں ہوگی۔مندرجہ بالا پابندیوں کا مقصد یہ ہے کہ کھالیں اپنی مرضی سے دینا قربانی کرنے والوں کا بنیادی حق ہے۔ انہیں یہ حق استعمال کرنے کی مکمل آزادی ہونی چاہیے اور ان پر کسی قسم کا دباو نہیں ہونا چاہئے۔گھر گھر جاکر زبردستی کھالیں جمع کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ محلے اور علاقے میں مساجد، مدارس اور فلاحی ادارے موجود ہیں لوگ بذات خود بھی اپنی مرضی سے جاکر کھالیں جمع کرواسکتے ہیں۔کھالیں جمع کرنے والی تنظیموں، اداروں اور مدارس کے کارکن جب کھالیں ایک جگہ سے دوسری جگہ منتقل کریں تو ان کے پاس قومی شناختی کارڈ ، ادارے کا کارڈ اور کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کی طرف سے اجازت نامہ کی نقل ہونی چاہیے بصورت دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کو اختیار ہوگا کہ وہ کھالیں ضبط کرلیں۔ہر ادارہ ، تنظیم اور مدرسہ اپنے علاقے کے متعلقہ ڈپٹی کمشنر اور ڈی پی او کو تحریری طور پر ایک مقام سے دوسرے مقام پر کھالیں منتقل کرنے کا جامع پلان پیشگی جمع کروائے گا تاکہ کھالیں لے کے جانے والی گاڑیوں کو سیکیورٹی فراہم کی جاسکے۔عیدالاضحٰی کے تینوں دن کسی قسم کا اسلحہ، ڈنڈے ، لاٹھی یا سلاخیں وغیرہ لے کر چلنے پر پابندی ہوگی۔ اس پابندی کا اطلاق لائسنس یافتہ اسلحے پر بھی ہوگا۔اس شق کو نافذ کرنے کے لئے قانون نافذ کرنے والے ادارے جگہ جگہ موٹر سائیکلوں اور گاڑیوں کو روک کر چیک کریں گے اور تلاشی لیں گے۔ تمام پارٹیاں ، تنظیمیں ، ادارے اور مدارس اپنے کارکنان کو ہدایت کریں گے کہ وہ اس سلسلے میں قانون نافذ کرنے والے اداروں سے مکمل تعاون کریں۔بغیر اجازت نامہ کے کھالیں جمع کرنے یا مندرجہ بالا شرائط کی خلاف ورزی کی صورت میں متعلقہ ادارے ،تنظیم اور اس کے کارکن کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی اور کھالیں ضبط کرلی جائیں گی۔تمام کالعدم تنظیموں کو قربانی کی کھالیں جمع کرنے کی قطعاً اجازت نہیں ہوگی۔درخواست گزار کو متعلقہ سیکیورٹی اداروں سے کلیئرنس حاصل کرنا لازم ہوگا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -