جندول میں مخالفین کے ہاتھوں احاطہ عدالت میں ایک شخص قتل

جندول میں مخالفین کے ہاتھوں احاطہ عدالت میں ایک شخص قتل

  

جندول(نمائندہ پاکستان)جندول تحصیل ثمرباغ میں احاطہ عدالت میں مخالفین نے اندھادھند فائرنگ کرتے ہوئے شخص کو قتل کر دیا۔ وقوعہ کے فوری بعد اپنے دفتر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے اسسٹنٹ کمشنر جندول صلاح الدین کا کہنا تھا کے وہ عدالت سے متصل مسجد میں باجماعت نماز ظہر ادا کر رہا تھا کہ اس دوران فائرنگ کی آواز سنی گئی جس کے بعد وہ بھاگ کر جائے وقوعہ پر پہنچے تو دیکھا کہ عدالت میں زیر سماعت کیس کے فریقین اسرار الدین اور سنبل بی بی کے ورثاء کے مابین تنازعہ جاری تھا تنازعہ کے دوران اسرار نے فائرنگ کرتے ہوئے کمال کو شدید زخمی کر دیا تھا جس کے بعد ملزم کو اسسٹنٹ کمشنر کے دفتر کے ملازمین نے گرفتار کر کے کمرے میں بند کر دیا جسے بعد ازاں پولیس کے حوالہ کیا گیا۔زخمی شخص کو طبعی امداد کیلئے ہسپتال ثمرباغ منتقل کیا گیا جہاں حالت تشویشناک ہونے کی وجہ سے اسے ضلعی ہیڈ کوارٹر ہسپتال تیمرگرہ منتقل کیا جا رہا تھا کہ اس نے راستے میں ہی جان دیدی۔مقامی ذرائع کے مطابق فریقین کے مابین تنازعہ زن کی وجہ سے عداوت اور عدالتی کیس چل رہا تھا۔ثمرباغ پولیس کے مطابق انہوں نے مقتول کے بھائی محمد ستار کی مدعیت میں ملزم کے خلاف دفعہ،302,34,15AAکے تحت مقدمہ درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -