غیر قانونی مویشی منڈیوںسے شہری اذیت کا شکار ہیں ،کوکب اقبال

غیر قانونی مویشی منڈیوںسے شہری اذیت کا شکار ہیں ،کوکب اقبال

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر) صارفین کی نمائندہ تنظیم کنزیومرز ایسو سی ایشن آف پاکستان کے چیئر مین کوکب اقبال نے کہا ہے کہ غیر قانونی مویشی منڈیوں کے قیام سے شہریوں کو شدیدٹریفک جام کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے انہوں نے کہا کہ شہر میں جگہ جگہ غیر قانونی مویشی منڈیوں کی بھرمار سے آلودگی اور جانوروں کے گوبر کی وجہ سے تعفن پھیل رہا ہے جو انسانی صحت کے لئے انتہائی نقصان دہ ہے کوکب اقبال نے کہا کہ صوبائی محکمہ داخلہ نے بائیس جولائی کو مویشی منڈیوں کے قیام کے لئے ایس او پیز جاری کیں مگر ان ایس اوپیز کے تحت لگائی جانے والی منڈیوں کی کوئی تعداد مقرر نہیں کی گئی جبکہ دو اگست کو کمشنر کراچی نے شہر میں آٹھ مویشی منڈیوں کے قیام کا حکم نامہ جاری کیاتھا مگر اس کے باوجود صوبائی اور شہری انتظامیہ نے علیحدہ علیحدہ احکامات جاری کئے جس کی وجہ سے غیر قانونی منڈ یوں کے فروغ کا باعث بنی انہوں نے کہا کہ ابہام کا شکار یہ احکامات ضلعی افسران اور پولیس کی کمائی کا ذریعہ بن گئے جبکہ کے ایم سی نے غیر قانونی مویشی منڈیوں کی روک تھام کے لئے ٹاسک فورس بھی تشکیل دی ہے یہ ٹاسک فورس ان غیر قانونی منڈیوں کو ختم کرنے کے لئے جہاں بھی کاروائی کے لئے جاتی ہے مذکورہ قانونی سقم کی وجہ سے رکاوٹ بن جاتا ہے کوکب اقبال نے کہا کہ اس قانونی سقم کے نتیجے میں رشوت کا بازار بھی گرم ہوگیاانہوں نے کہا کہ کوئی بھی قانون بناتے وقت عوام کے مفاد کو پیش نظر رکھنا چاہئے جبکہ بیورو کریٹس ان معاملات میں سقم ڈال کر ذاتی مفادات حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں جس کی وجہ سے رشوت ،کرپشن اور بد عنوانیاں ختم ہونے کے بجائے ان میں مزیداضافہ ہوتا ہے کوکب اقبال نے کہا کہ ان غیر قانونی مویشی منڈیوں کی وجہ سے شہر میں جگہ جگہ ٹریفک جام ہو رہا ہے اور لوگ گھنٹوں گھنٹوں ٹریفک میں پھنسے رہتے ہیں خصوصاََ ایمبو لنس ،فائر بریگیڈ او ر پولیس کی گاڑیاں بھی ٹریفک جام ہونے سے مشکلات کا شکار ہوتی ہیں انہوں نے کہا کہ ان غیر قانونی مویشی منڈیوں کے خلاف فوری کاروائی کی جائے تاکہ شہر سے ٹریفک اور آلود گی کے مسائل حل ہو سکیں

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -