واٹس ایپ کی خطرناک خامیاں سامنے آگئیں 

واٹس ایپ کی خطرناک خامیاں سامنے آگئیں 

کیلیفورنیا(آئی این پی) محققین نے مقبول موبائل ایپلیکیشن واٹس ایپ کی بڑی خامیاں ظاہر کردیں، تجربے نے ثابت کر دیا کہ واٹس ایپ سے بھیجے گئے پیغامات کو مکمل طور پر تبدیل کیا جا سکتا  ہے۔تفصیلات کے مطابق واٹس ایپ کی خطرناک خامیاں سامنے آگئیں، محققین نے مقبول موبائل ایپلیکیشن واٹس ایپ  کے اندر ایک ایسی سیکیورٹی خامی کا پتا لگایا ہے جس کے ذریعے آپ کے بھیجے گئے میسج کے ایک ایک لفظ کو تبدیل کرکے آپ کے نام سے پھیلایا جا سکتا ہے۔چیک پوائنٹ نامی سائبر سیکیورٹی فرم کی ایک ٹیم نے تجربہ کرکے بتایا کہ ٹول واٹس ایپ کے اندر کوٹ کیے گئے میسج کو بالکل تبدیل کیا جاسکتاہے، صرف یہی نہیں اس ٹول کے ذریعے پیغام بھیجنے والے شخص کی شناخت بھی تبدیل کی جاسکتی ہے۔واٹس ایپ بھی فیس بک کی ملکیت ہے اور ریسرچرز کے مطابق فیس بک تیکنیکی مسائل کے سبب یہ خامیاں دورنہیں کرسکتا۔

مزید : عالمی منظر