شناختی کارڈ کی شرط پر ہڑتال کا اعلان لیکن اب تاجروں نے عمل درآمد موخر کردیا

شناختی کارڈ کی شرط پر ہڑتال کا اعلان لیکن اب تاجروں نے عمل درآمد موخر کردیا

  

لاہور(ویب ڈیسک) تاجر تنظیموں نے خریدو فروخت پر شناختی کارڈ کی شرط پر ایف بی آر کی جانب سے 30ستمبر تک کارروائی نہ کرنے پر 15,16 اور 26,27 اگست کی ہڑتال کو موخر کرنے کا اعلان کیا ہے۔ مرکزی تنظیم تاجران پاکستان کے صدر محمد کاشف چوہدری کی قیادت میں ملک بھر کے تاجر رہنماﺅں کے ایک وفد نے چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی اور قومی اسمبلی میں حکومت کے چیف وہیپ عامر ڈوگرسے ملاقات کی اور انہیں تاجر برادری کی جانب سے ایف بی آر کی ٹیکس پالیسی پر اپنے تحفظات سے آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا چھوٹے تاجروں کیلئے تاجر نمائندوں کی تشکیل کردہ کمیٹی 30 ستمبر تک فکس ٹیکس سکیم تشکیل دے گی جو ملک بھر کے چھوٹے تاجروں کیلئے قابل عمل فکس ٹیکس سکیم لائے گی۔ محمد کاشف چوہدری نے کہا مذاکرات میں طے کیا گیا کہ تاجر برادری سے ہول سیلر، ریٹیلر کیلئے ٹرن اوور کی بجائے شرح منافع پر ٹیکس وصول کیا جائے گا۔ خواجہ سلیمان صدیقی، شرافت علی مبارک صدر کے پی کے حاجی محمد افضل شیخ حبیب کراچی، شرجیل میر راولپنڈی، ضیاءاحمد راجہ اسلام آباد، لاہور سے اشرف بھٹی، ظہیر اے بابر، میاں ادریس اور دیگر تاجر قائدین نے شرکت کی۔ تاجر تنظیموں کے ساتھ چھوٹے دکانداروں کے لئے بنائی جانے والی سکیم کو حتمی شکل دینے کے لئے مزید مشاورت ہو گی۔ اس سلسلے میں تاجروں نے بھی مختلف مسودات پیش کئے جس پر ایف بی آر سنجیدگی سے غوروخوض کرے گی۔ بعد ازاں تاجر راہنماﺅں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ایف بی آر اور تاجروں کے درمیان ٹیکس امور پر مذاکرات کامیاب ہو گئے ہیں، قومی اسمبلی میں تحریک انصاف کے چیف وہیپ نے کہا ایف بی آر تاجروں کے ساتھ مل بیٹھ کر فکسڈ ٹیکس سکیم کو حتمی شکل دینے پر رضامند ہو گیا ہے، تاجروں کے تحفظات دور اور تمام مسائل حل کرنے پر اتفاق کیا ہے۔ اجمل بلوچ نے کہا کہ ہمارے مذاکرات کامیاب ہوگئے ہیں۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -