شیخ رشید اور فواد چوہدری آمنے سامنے ، سمجھوتہ ایکسپریس بند کرنےکے فیصلے پر وزیرسائنس و ٹیکنالوجی نے انتہائی حیران کن بات کہہ دی

شیخ رشید اور فواد چوہدری آمنے سامنے ، سمجھوتہ ایکسپریس بند کرنےکے فیصلے پر ...
شیخ رشید اور فواد چوہدری آمنے سامنے ، سمجھوتہ ایکسپریس بند کرنےکے فیصلے پر وزیرسائنس و ٹیکنالوجی نے انتہائی حیران کن بات کہہ دی

  

کراچی (ویب ڈیسک)وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا ہے کہ سمجھوتہ ایکسپریس بند کرنے کا فیصلہ وزیر ریلوے نہیں کرسکتے ،یہ فیصلہ قومی سلامتی کمیٹی اور فارن افیئرز نے کرنا ہے، کابینہ میں بھی اس بارے میں بات نہیں ہوئی اس چودہ اگست کی تھیم کشمیر بنے گا پاکستان ہے، پندرہ اگست یوم سیاہ کے طور پر منایا جائے گا، جماعت اسلامی کے رہنمامشتاق احمد خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں پچھلے تیس سال میں موثر آزادی کی تحریک چلی ہے، اقوام متحدہ کا نمائندہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی رپورٹ پیش کرتے ہوئے روپڑا تھا، کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا بھارتی قدم ایکٹ آف وار ہے، پیپلز پارٹی کے رہنما مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ کشمیریوں کی تحریک آزادی اس نہج پر پہنچ گئی ہے کہ انڈیا کیلئے اب کشمیر پر تسلط قائم رکھنا ممکن نہیں ہوگا،آل پارٹیز حریت کانفرنس کی نمائندہ شمیم شال نے کہا کہ کشمیریوں کو دنیا کے ساتھ پاکستانی عوام اور میڈیا کی سپورٹ بھی چاہئے، پاکستان نے جو اقدامات اٹھائے ہیں اس پر شکرگزار ہیں لیکن مزید بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے۔روزنامہ جنگ کے مطابق وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا کہ پاکستان ہندوستان کے ساتھ تعلقات معمول پر لانا چاہتا ہے، ہم نے ہندوستان کو اتنی لچک دکھائی کہ حکومت پر ملک کے اندر تنقید ہورہی ہے، اپوزیشن کہتی ہے کہ حکومت نے مودی کے سامنے معذرت خواہانہ رویہ اختیار کیا، ہندوستان ہمارے رویہ میں لچک کو ہماری کمزوری سمجھ رہا ہے، ہندوستان سمجھتا ہے اسے پاکستان سے کوئی خطر ہ نہیں ہے ،اس کے نزدیک پاکستان کی کوئی اہمیت نہیں ہے، کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کر کے ہندوستان نے ہمیں دیوار سے لگادیا ہے، اب پاکستان انڈیا سے متعلق پرانی پالیسی جاری نہیں رکھ سکتا۔ فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ اگر ہندوستان پاکستان سے بات کرنے کو تیار نہیں تو ہم سفیروں اور سفارتخانوں پر کیوں خرچہ کررہے ہیں، حکومت کا ہندوستان کے ساتھ سفارتی تعلقات ڈاﺅن گریڈ کرنا اچھا فیصلہ ہے، ہندوستان اپنی پالیسیوں پر نظرثانی نہیں کرتا تو بات بہت زیادہ بڑھ سکتی ہے، ہم زندہ قوم ہیں اپنی عزت و وقار کیلئے ہر حد تک جائیں گے۔فواد چوہدری نے کہا کہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا احمقانہ اور شدت پسندانہ فیصلہ کر کے مودی نے اپنی انگلیاں جلائی ہیں، ہندوستان میں اپوزیشن کی طرف سے اس کی شدید مخالفت آرہی ہے، کشمیر میں محبوبہ مفتی اور عمر عبداللہ جیسے لوگ نظربند ہیں جو ساری زندگی انڈین لائن پر رہے، حالت یہ ہے کہ کشمیری پولیس کو غیر مسلح کرنے کے بعد اسے وہاں سے نکال لیا گیا ہے، اجیت ڈوڈل کشمیر پہنچ گیا ہے اس کا کشمیر سے کیا تعلق بنتا ہے۔ فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ہندوستان نے یہ کام اسرائیل سے متاثر ہو کر کیا ہے جنہوں نے فلسطین میں ڈیموگرافک تبدیلی کی تھی، فلسطین میں بیس پچیس لاکھ کی آبادی تھی جبکہ کشمیر میں ڈیڑھ کروڑ آبادی ہے، ہندوستان ڈیڑھ کروڑ آبادی کی ڈیموگرافک چینج کیسے کرے گا۔ فواد چوہدری نے کہا کہ پاکستان کی سیاسی جماعتوں میں آپسی اختلاف ضرور ہیں لیکن کشمیر کاز پر سب کا موقف ایک ہے۔ فواد چوہدری نے کہا کہ کشمیر پر قرارداد کی منظوری کے وقت عمران خان پارلیمنٹ میں نہیں تھے تو شہباز شریف کہاں تھے، ہندوستان کا کشمیر پر قبضہ غاصبانہ ہے، تحریک آزادی کشمیر کو دبانا انڈیا کیلئے ممکن نہیں ہے، آرٹیکل 370اور 35A ہری سنگھ اور انڈین حکومت کے معاہدہ کی بھارتی آئین میں expression ہے، پاکستان اور ہندوستان کی جنگ ہوئی تو اس کی شدت برلن سے لے کر واشنگٹن تک، واشنگٹن سے لے کر لندن تک، ریاض سے لے کر تہران تک اور تہران سے لے کر قاہرہ تک محسوس کی جائے گی، کشمیر پر ہندوستان کے غاصبانہ قبضہ کیخلاف پوری پاکستانی قوم یکجا ہے۔ فواد چوہدری نے کہا کہ اس چودہ اگست کی تھیم کشمیر بنے گا پاکستان ہے، پندرہ اگست یوم سیاہ کے طور پر منایا جائے گا، پاکستان اور برطانیہ سمیت پوری دنیا میں بھارت کیخلاف مظاہرے ہوں گے، میں چودہ اگست کو مظاہرہ میں شرکت کیلئے کوپن ہیگن میں ہوں گا، نریندر مودی کی سیاست عروج پر پہنچ کر اب زوال کی طرف جائے گی۔ فواد چوہدری نے کہا کہ سمجھوتہ ایکسپریس بند کرنے کا فیصلہ وزیر ریلوے نہیں کرسکتے ،یہ فیصلہ قومی سلامتی کمیٹی اور فارن افیئرز نے کرنا ہے، کابینہ میں بھی اس بارے میں بات نہیں ہوئی شیخ رشید نے آج کہا کہ انہوں نے سمجھوتہ ایکسپریس بند کردی ہے، سمجھوتہ ایکسپریس بند کرنے کا نقصان صرف پنجابی اور سکھ کمیونٹی کو ہوگا، پوری دنیا کی سکھ برادری کی ہمدردیاں پاکستان کے ساتھ ہیں، دیکھنا پڑے گا کہ سمجھوتہ ایکسپریس بند کرنے کا فائدہ زیادہ ہے یا نقصان زیادہ ہے۔فواد چوہدری کا کہا تھا کہ پاکستان سے گلابی نمک بڑی مقدار میں انڈیا نہیں جاتا ہے، ہمارا 90فیصد نمک پاکستان میں ہی استعمال ہوتا ہے، پاکستان اور انڈیا میں کچھ زیادہ تجارت نہیں ہے، دو طرفہ تجارت بند کرنے کا فیصلہ علامتی قدم ہے، ہم نے ہر کوشش کرلی لیکن ہندوستان انسان کا بچہ نہیں بن رہا ہے، چودہ اگست کو وزیراعظم اور اپوزیشن قیادت کی آزاد کشمیر میں موجودگی اچھی تجویز ہے، وزیراعظم اس تجویز پر جو فیصلہ کریں گے اس پر عمل ہوگا۔جماعت اسلامی کے رہنمامشتاق احمد خان نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں پچھلے تیس سال میں موثر آزادی کی تحریک چلی ہے، اقوام متحدہ کا نمائندہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی رپورٹ پیش کرتے ہوئے روپڑا تھا، کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا بھارتی قدم ایکٹ آف وار ہے، بھارت نے بین الاقوامی اداروں کی قراردادوں کوپھاڑ کر پھینک دیا ہے، بھارت کا یہ قدم جس قدر سنگین ہے پاکستان کا جواب اتنا مضبوط نہیں ہے، پاکستان نے تمام اقدامات باہمی تعلقات میں کمی تک محدود ہیں، سفارتی تعلقات ڈاﺅن گریڈ کردیئے گئے مگر عالمی سطح پر کچھ نہیں کیا گیا، وزیراعظم عمران خان کو تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ ملا کر روڈ میپ دیناچاہئے تھا، یہ روڈ میپ ایسا ہوتا جس سے کشمیری مطمئن ہوتے اور ہندوستان مضبوط جواب جاتا۔مشتاق احمد خان کا کہنا تھا کہ سمجھوتہ ایکسپریس بند کرنے کا فیصلہ بالکل درست ہے، پاکستان نے اپنے اقدامات سے دنیا کو پیغام دیا ہے کہ کچھ غیرمعمولی ہوا ہے، ہندوستان کیلئے پاکستان کی فضائی حدود بھی بند کردینی چاہئے، پاکستان دنیا کو بتائے کہ اب فیصلہ کن لمحہ ہے، کشمیریوں کو جو کرنا تھا وہ کرلیا ہے اب جو کچھ کرنا ہے پاکستان نے کرنا ہے، پاکستان کو جامع منصوبہ بنانا چاہئے جس میں فوج، سول قیادت اور سیاسی جماعتیں ایک صفحہ پر ہوں۔ مشتاق احمد خان نے کہا کہ پلوامہ واقعہ کے بعد اندرونی اتحاد اور پاک فوج کے جہاد فی سبیل اللہ نے ہمیں بچایا، کشمیر کا مضبوط کیس دنیا کے سامنے پیش کرنے میں ناکامی ہماری کمزوری ہے، یورپی یونین کی فارن افیئرز کمیٹی کے رکن نے کہا ہے کہ یورپی پارلیمنٹ میں ہندوستان پر پابندی لگانے کا مطالبہ کریں گے اور کشمیر میں مظالم کیخلاف آواز اٹھائیں گے، چودہ اور پندرہ اگست کو پوری دنیا میں کشمیریوں کو منظم کر کے احتجاج کرنا چاہئے۔مشتاق احمد خان نے کہاکہ پاکستان نے سلامتی کونسل کی غیرمستقل نشست کیلئے انڈیا کو ووٹ دیدیا ہے۔ پیپلز پارٹی کے رہنما مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ حکومت نے کچھ اقدامات اٹھائے ہیں لیکن لوگ مزید کی توقع کررہے ہیں، عوام کو صرف ان اقدامات سے مطمئن نہیں کیا جاتا ہے، حکومت کا خارجہ پالیسی میں کتنا عمل دخل ہے سب کو پتا ہے،۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -