بھارت نے مظلوم کشمیریوں کے قتل عام کا لائسنس جاری کردیا،ہمارے وزیر خارجہ کام کم، اداکاری زیادہ کرتے ہیں:سینیٹر مشتاق احمد خان

بھارت نے مظلوم کشمیریوں کے قتل عام کا لائسنس جاری کردیا،ہمارے وزیر خارجہ کام ...
بھارت نے مظلوم کشمیریوں کے قتل عام کا لائسنس جاری کردیا،ہمارے وزیر خارجہ کام کم، اداکاری زیادہ کرتے ہیں:سینیٹر مشتاق احمد خان

  

پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن) امیر جماعت اسلامی خیبر پختونخوا سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ  مقبوضہ کشمیر میں ہندوستان کی ناجائز قابض فوج کو ہندوستان کے آئین میں کشمیر کی متنازع حیثیت کو تسلیم کرنے کی دفعات 370 اور35اےختم کرکے مظلوم کشمیریوں کے قتل عام کا لائسنس دے دیا گیا ہے،ہمارے وزیر خارجہ کام کم، اداکاری زیادہ کرتے ہیں، بھارت جارحانہ اقدامات کررہا ہے لیکن  وزیر اعظم اپوزیشن سےبھارت کےخلاف کارروائی کاپوچھ رہے ہیں،وزیر اعظم کوکشمیر کے مسئلے پر طاقتوراور جارحانہ موقف اپنانا چاہئے ، حکومت کو سفارتی تعلقات کم کرنے کی بجائے ختم کرنے چاہئے تھے،سمجھوتہ ایکسپریس کی معطلی کے ساتھ ساتھ فضائی حدود بھی بند کرنی چاہئے،حکومت کو آزادی کشمیر کے لئے اپوزیشن اور پوری قوم کے اتحاد و اتفاق سے ایک جامع روڈ میپ پیش کرنا چاہئے۔

اسلام آباد میں بھارتی ایمبیسی کے سامنے جماعت اسلامی کے زیر اہتمام ’کشمیر بچاؤ مارچ‘ سے خطاب کرتے ہوئےسینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا کہ  سمجھوتہ ایکسپریس کی معطلی اور سفارتی تعلقات میں کمی کافی نہیں ہیں، حکومت کو بین الاقوامی فورم پر آواز اٹھانی چاہئے،حکومت کو ہندوستان کے ساتھ فضائی حدود بھی بند کرنی چاہئیں،پاکستان کو اپنے تمام پتے کھیل لینے چاہئیں، وزیر اعظم کو تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ ملا کر ایک ایسا روڈ میپ دینا چاہئے تھا جس سے بھارت کو جواب جاتا ، کشمیری مطمئن ہوتے اور عالم اسلام سمیت پوری دنیا کو ایک پیغام جاتا لیکن ابھی تک وہ بھی نہیں دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں  ملٹری آپریشنز میں ایک لاکھ پانچ ہزار گھر تباہ کئے گئے، تیرہ ہزار خواتین کی عصمت داری ایک سال کے دوران تین سو زائد ڈاکٹر ز اور پی ایچ ڈیز کو قتل کردیا گیا ہے، پوری دنیا کو پتہ مودی دہشت گرد اور مسلمانوں کا قاتل ہے،بھارت نے بین الاقوامی اداروں کی قراردادوں اور فیصلوں کو پرزے پرزے کردیا ہے،ہمارے سفارتخانے چند سالوں 56ارب روپے خرچ کرچکے لیکن ہندوستان کو غاصب اور دہشت گرد ریاست قرار دلوانے میں کوئی کردار ادا نہ کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں نے جو کیا وہ کرچکے ہیں ، اب جو بھی کرنا پاکستانی قوم اور حکومت نے کرنا ہے،ہمارے سارے اقدامات رد عمل میں ہوتے ہیں لیکن ہندوستان جو بھی کام کرتا ہے وہ پرو ایکٹیو ہوتے ہیں،حکومت کو ایک ایسا فعال منصوبہ بنانا چاہئے جس میں سیاسی جماعتیں ، عسکری قیادت اور حکومت ایک پیج پر ہوں  اور بھارت سمیت دنیا بھر کو ایک واضح پیغام دینا چاہئے۔

انہوں نے کہاکہ ،کشمیری عوام نے گزشتہ تیس سال میں تاریخ ساز قربانیاں دی ہیں،آزادی کشمیر کے لئے مقبوضہ کشمیر کے عوام نے اپنی طاقت سے بڑھ کر کردار ادا کیا ہے،اب پاکستانی حکومت ، ریاست اور پاکستانی قوم کی باری ہے، جماعت اسلامی کا مظاہرہ حکومت سے کشمیر کے مسئلے پر حکومت سے ایکشن لینے کے مطالبے کے لئے ہے، حکومتی پارٹی اپنے احتجاج میں کس سے کیا مطالبہ کرے گی؟ جماعت اسلامی مظلوم کشمیری عوام ساتھ ہے اور ان کو کبھی بھی تنہا نہیں چھوڑے گی۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -