فضل الرحمن (ن) لیگ،پیپلز پارٹی سے ناراض،اے پی سی کھٹائی میں پڑ گئی

فضل الرحمن (ن) لیگ،پیپلز پارٹی سے ناراض،اے پی سی کھٹائی میں پڑ گئی

  

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اپوزیشن جماعتوں میں عدم اعتماد کے باعث حکومت کے خلاف مشترکہ احتجاجی تحریک کھٹائی میں پڑگئی اور  آل پارٹیز کانفرنس کے امکانات بھی کم ہوگئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں بلز کی منظوری کے دوران بڑی جماعتوں کے کردار سے جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان ناراض ہیں۔ جے یو آئی نے حکومت کے خلاف اکیلے تحریک چلانے کی تیاریاں شروع کردی ہیں،اس سلسلے میں مولانافضل الرحمان نے 7 ستمبر کو پشاور میں احتجاجی جلسے اور ریلی کی کال بھی دے دی ہے۔ذرائع کے مطابق احتجاجی تحریک سے قبل مولانافضل الرحمان نے مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی سے تحریری معاہدے کی شرط بھی رکھ دی ہے۔عید سے قبل مولانا فضل الرحمان نے ن لیگ اور پیپلزپارٹی کی قیادت سے تحریری معاہدے کی یقین دہانی کروائی تھی تاہم اس کے باوجود دونوں جماعتوں نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں قانون سازی میں حکومت کا ساتھ دیا۔اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس کے ایجنڈے کے لیے عید کے بعد رہبرکمیٹی کا اجلاس بھی ہونا تھا تاہم دونوں بڑی جماعتوں کے کردار نے مولانا فضل الرحمان کو ناراض کردیا ہے۔

فضل الرحمن ناراض

مزید :

صفحہ آخر -