فضائی سروس کی مکمل بحالی، مگر؟

فضائی سروس کی مکمل بحالی، مگر؟

  

 آج(اتوار) رات بارہ بجے کے بعد پاکستان کے تمام ہوائی اڈے آپریشنل ہو جائیں گے اور بین الاقوامی پروازوں کی آمدورفت بھی شروع ہو جائے گی،سول ایوی ایشن حکام نے اس کے لئے نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا ہے۔ وفاقی حکومت نے وبا میں کمی کے حوالے سے جو فیصلے کئے انہی کے مطابق فضائی سروس بحال کی گئی ہے، جہاں تک ہمارے ملک کا احوال ہے تو اندرون ملک پروازیں تو چلیں گی،لیکن پی آئی اے کی بین الاقوامی سروس بدستور معطل رہے گی،جس کی وجہ پی آئی اے پائلٹس کے لائسنسوں کا معاملہ ہے۔ وزیر ہوا بازی کے بیانات کے بعد یورپی یونین،امریکہ اور برطانیہ کے علاوہ کئی دوسرے ممالک کی طرف سے ہماری قومی سروس کی آمد و رفت چھ ماہ تک کے لئے معطل کر دی گئی تھی۔ اگرچہ لائسنسوں کے معاملے میں کافی پیش رفت ہو چکی ہے اور پاکستان کے متعلقہ حکام اور شعبے کی طرف سے یورپی یونین اور دیگر ممالک سے پابندی ختم کرنے کی درخواست کی گئی ہے،لیکن ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں ہوا اور جب تک پھر سے اجازت نہ ہو، یہ ممکن نہیں کہ پی آئی اے بین الاقوامی روٹ پر پروازیں شروع کر سکے۔ پی آئی اے انتظامیہ نے اس کے متبادل کے لئے پرتگال ایر ویز سے مذاکرات کئے اور کوئی معاہدہ کیا ہے،جس کے مطابق پابندی ختم ہونے تک پرتگال ایر ویز کی پروازیں پی آئی اے کی پروازوں کے شیڈول کے مطابق چلائی جائیں گی۔یہ معروضی حالات ہیں، جو یہ دعوت دیتے ہیں کہ کوئی بھی کام عجلت میں نہ کیا جائے اور پہلے سارے پہلوؤں پر غور ہونا چاہئے،اب پروازیں چلیں گی، ہوائی اڈے مصروف ہوں گے،لیکن ہماری عزت افزائی اپنی نہیں پرائی پروازوں سے ہو گی۔

مزید :

رائے -اداریہ -