مصنوعی جنگل لگانے سے ماحولیاتی آلودگی کم ہوگی:جواد احمد قریشی

مصنوعی جنگل لگانے سے ماحولیاتی آلودگی کم ہوگی:جواد احمد قریشی

  

 لاہور (جنرل  رپورٹر)منصوعی جنگل  لگانے کے لیے 35 اقسام کے ایک لاکھ 60 ہزار 605 درخت لگائے جائیں گے جو جاپانی طریقہ کار کے تحت پارکس اور سڑکوں کے گرد لگائے جا رہے ہیں۔ڈائریکٹر جنرل پی ایچ اے جواد احمد قریشی کا اس موقع پر کہنا تھا کہ مصنوعی جنگل لگانے سے جہاں ماحولیاتی آلودگی میں کمی ہو گی و ہی شہر کی خوبصورتی میں بھی اضافہ ہو گا اور درختوں کے ہونے سے ہی بارشیں ہوتی ہیں۔ چیئر مین ایگری ٹورزام ڈویلپمنٹ کارپوریشن آف پاکستان بابر راجہ کا کہنا  ہے کہ موسمیاتی تبدیلی اور آلودگی پہ قابو پانے کے لیے درخت اللہ تعالیٰ کی طرف سے قدرتی تحفہ اور ذریعہ ہے،ماہرین تو یہ کہتے ہیں کہ ملک کا پچیس فیصد حصہ جنگلات پر مشتعمل ہونابہت ضروری ہے مگر افسوس کے پاکستان کا تقریبا ۵ فیصد حصہ ہی جنگلات پر مشتمل ہے  پاکستان میں بڑھتی ہوئی آبادی اور موسمی شدت کے پیش نظر شجرکاری مہم وقت کی اشد ضرورت ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ چیونٹیوں سے لیکر انسان، پرندے اور جانور سب کی زندگیاں درختوں سے جڑی ہیں۔ وہ اسی تعلق کو مضبوط بنانے کے لییایس اے گروپ اور پی ایچ کے  اشتراک  سے شہرلاہور  میں شجر کاری مہم شروع کررہے ہیں۔ڈائریکٹر پی ایچ اے جواد احمد قریشی نے شجرکاری مہم میں تعاون کرنے پر ایس اے گروپ اور ایگری ٹورزام کی کاوشوں کو خراج تحسین پیش کیا۔

مزید :

کامرس -