بس بہت ہوگئی، عمران خان بلاتاخیر سرائیکی صوبہ قائم کریں، ظہوردھریجہ 

بس بہت ہوگئی، عمران خان بلاتاخیر سرائیکی صوبہ قائم کریں، ظہوردھریجہ 

  

 ملتان (سٹی رپورٹر)لاہور میں 50 ہزار ارب روپے کی لاگت سے نئے شہر کے منصوبے کو مسترد کرتے ہیں۔ یہ منصوبہ محروم سرائیکی وسیب کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے۔ عمران خان محروم علاقوں کو نظر انداز کر کے نواز شریف کے نقش قدم پر چلنے سے باز رہیں، ورنہ محروم سرائیکی خطوں کی آہیں اور بد دعائیں نواز شریف کی طرح ان کو بھی لے ڈوبیں گی، ملتان کے (بقیہ نمبر4صفحہ6پر)

لئے صوبائی دارالحکومت کے منصوبے کا اعلان کیا جائے۔ ان خیالات کا اظہار سرائیکستان قومی کونسل کے صدر ظہور دھریجہ نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر معروف شاعر سانول صائق باقر پوری، وحید بہاولپوری، معروف سنگر ثوبیہ ملک اور مقبول کھرل موجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کی تبدیلی کا نعرہ یہ تھا کہ محروم اور پسماندہ علاقوں کو ترقی دی جائے گی اور بڑے شہروں کے پھیلاؤ کو روکا جائے گا۔ تقریروں کے دوران ہمیشہ وہ اس بات کو دہراتے کہ نواز شریف اور شہباز شریف نے پسماندہ علاقوں کے وسائل لاہور پر خرچ کر کے بہت بڑا ظلم کیا ہے۔ لیکن آج وہ خود نواز شریف سے بھی دو ہاتھ آگے چلے گئے ہیں اور محروم سرائیکی وسیب کو نظر انداز کر کے وہ کچھ دے رہے ہیں جو کہ نواز شریف بھی نہ دے سکے۔ ظہور دھریجہ نے کہا کہ لاہور بارڈر سٹی ہے اور انٹرنیشنل لا کے مطابق بارڈر سٹی پر سرمایہ کاری ممنوع سمجھی جاتی ہے خصوصاً ان حالات میں جبکہ ہمسایہ ملک کے ساتھ کشیدگی ہو۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان اپنے وعدے کے مطابق بلا تاخیر سرائیکی صوبہ قائم کریں اور ان کو نیا شہر بسانے کا شوق ہے تو ہیڈ محمد والا کی دوسری طرف تھل میں لاکھوں ایکڑ سرکاری اراضی موجود ہے اور سرائیکی صوبے کے لئے ملتان کے قریب نیا شہر صوبائی دارالحکومت کے طور پر آباد کریں، میں دعوے سے کہتا ہوں کہ انہوں نے لاہور میں پچاس ہزار ارب روپے خرچ کرنے کی بات کی ہے جبکہ سرائیکی دارالحکومت کا وہ اعلان کریں، حکومت پاکستان کو ایک لاکھ ارب کا فائدہ ہوگا۔

ظہور دھریجہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -