وزارت ریلوے نے اہم ایونٹ فراموش کر دیا،نئے پاکستان میں" پرانے پاکستان" کی "آزادی ٹرین" نہیں چلے گی

 وزارت ریلوے نے اہم ایونٹ فراموش کر دیا،نئے پاکستان میں" پرانے پاکستان" کی ...
 وزارت ریلوے نے اہم ایونٹ فراموش کر دیا،نئے پاکستان میں

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )نئے پاکستان میں پرانے پاکستان کی آزادی ٹرین نہیں چلے گی، وزارت ریلوے نے یوم پاکستان کی مناسبت سے چلنے والا اہم ایونٹ فراموش کر دیا۔

نجی ٹی وی کے مطابق وزارت ریلوے نے یوم پاکستان کی مناسبت سے چلنے والا اہم ایونٹ فراموش کر دیا ہے جس کی وجہ سے اس مرتبہ "آزادی ٹرین" نہیں چلائی جائے گی کیونکہ اس حوالے سے ریلوے حکام کی جانب سے آزادی ٹرین کی تیاری کے لیے فنڈز ہی جاری نہیں کیے گئے۔ ریلوے ذرائع کے مطابق  نئی ٹرینیں چلانے والے شیخ رشید بھی آزادی ٹرین کو بریک لگا دی ہے جس کی وجہ سے نئے پاکستان میں نوجوان نسل کو پاکستان کی ثقافت والی ٹرین سے محروم کر دیا گیا۔

یاد رہے کہ ن لیگی رہنما اور سابق وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق کے دور میں آزادی پاکستان کی تقریبات کے سلسلے میں آزادی ٹرین چلائی جاتی تھی، آزادی ٹرین پاکستان کے چاروں صوبوں،آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان  کی ثقافت اجاگر کرتے فلوٹس پہ مشتمل ہوتی تھی۔  آزادی ٹرین اسلام آباد سے روانہ ہو کر پشاور، راولپنڈی، لاہور، ملتان، سکھر، کوئٹہ، کراچی سمیت ملک کے مختلف سٹیشنوں پہ رکتی تھی، آزادی ٹرین پہ تحریک پاکستان کے حوالے سے معلومات ہوتی تھیں، آزادی ٹرین کا مقصد پاک فوج کی قربانیوں اور شہدا کو سلام پیش کرنا تھا۔ ہر صوبے کے ثقافتی ورثے سے مزین 'آزادی ٹرین' نوجوان نسل کے لیے ملکی تاریخ سے آگاہی کا بہترین ذریعہ تھی۔ن لیگ کے دور حکومت میں ہر سال اگست میں چلنے والی "آزادی ٹرین" میں  تصاویر ڈاکومنٹری فلم دیکھائی جاتی تھیں اس میں مسلۂ کشمیر کو خصوصی طور پر اجاگر کیا جاتا تھا، آزادی ٹرین ملک بھر میں بچوں اور نوجوان نسل کوتحریک آزادی سے روشناس کرتی تھی۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -