نیسلے نے غذائیت کی تعلیم کے سلسلے میں ہیلدی کڈز کا جشن منایا

نیسلے نے غذائیت کی تعلیم کے سلسلے میں ہیلدی کڈز کا جشن منایا

  



لاہور(پ ر) نیسلے پاکستان نے تین اسکول سسٹمز کے ساتھ مل کر 50,000 بچوں کو غذائیت کی تعلیم دینے کا جشن، سالانہ نیسلے ہیلدی کڈز ڈے کے طور پر منایا ۔اس دن کی سرگرمیوں میں پارٹنر اسکولوں، کیئر فاﺅنڈیشن، سلور اوک اور ٹرسٹ فار ایجوکیشن آف ڈیزرونگ اسٹوڈنٹس کے طلباءکی جانب سے پیش کئے جانے والے ٹیبلو ز کے علاوہ آرٹ کی نمائش اور کوئز اور تقریری مقابلہ شامل تھا۔تمام سرگرمیاں غذائیت ، صحت مند کھانے اور ایک فعال طرز زندگی پر بچوں کی معلومات کو ظاہر کرتی تھیں۔ نیسلے ہیلدی کِڈز پروگرام نیوٹریشن ، ہیلتھ اور ویل نیس (یعنی غذائیت، صحت اور فلاح) کی عالمی کمپنی، نیسلے کاصحت مند کھانوں، غذائیت، حفظان صحت اور جسمانی سرگرمی سے متعلق صحت مند طرز زندگی کے تمام پہلوو¿ں پر اسباق کو متعارف کرانے کے عزم کے ساتھ عالمی سطح کااقدام ہے ۔ 6 تا 16 سال کی عمر کے بچوں کو نصابی سرگرمیوں کے ذریعے آگاہی کی فراہمی کے اس پروگرام کے تحت 120 اساتذہ اور 100 والدین کو غذائیت اور جسمانی سرگرمیوں کی اہمیت کے حوالے سے تربیت فراہم کی جا چکی ہے۔پاکستان اُن تین مُلکوں میں سے ایک ہے جہاں دنیا بھر میں موجود ناقص غذائیت کے شکار بچّوں کی نصف تعداد پائی جاتی ہے ۔ نیشنل نیوٹرشن سروے 2011ءکے مطابق نشونما میں رکاوٹ اور ناقص غذائیت پاکستان میں وسیع پیمانے پر موجود ہیں جس کے اسباب غذائی قلّت اور بچّوں کی ناقص صحت اور غذائیت ہیں۔ نیسلے پاکستان کے منیجنگ ڈائرکٹر مگدی بٹاٹو نے کہا ”بطور ایک غذائی ماہر ہمیں احساس ہے کہ ہم بہت سے افراد کی زندگیوں کو بہتر بنانے میں اپنا کردار ادا کرسکتے ہیں۔

ہماری خواہش ہے کہ اپنی اس کوشش کو جاری رکھتے ہوئے اعداد و شمار کو دگنا کریں اور اس پروگرام کو دوسرے صوبوں تک وسعت دیں۔ہم پاکستان کے مستقبل کا حصہ بننا چاہتے ہیںاور زیادہ سے زیادہ پاکستانیوں کو بہتر کل فراہم کرتے ہیں۔ ہم نے حال ہی میں NHK ویب سائٹ کا آغاز کیا ہے۔ جہاںبچے، والدین اور اساتذہ انتہائی آسان انداز میں پیش کی گئی معلومات تک رسائی حاصل کرسکتے ہیں۔©©“ کیئر فاﺅنڈیشن کی منیجنگ ٹرسٹی، سیما عزیز نے کہا کہ کم غذائیت بہت بڑا مسئلہ ہے۔”دستیاب ذرائع میں رہتے ہوئے،چیزوں کو بہتر بنانے کا موقع، ایک بہترین خیا ل تھا ۔ جب اس پر عمل درآمد ہو ا تو نتائج ہماری توقعات سے بہتر تھے۔“

مزید : کامرس