پانچ ارب ڈالر کی بچت، ایک کروڑ ملازمین کا روزگار!

پانچ ارب ڈالر کی بچت، ایک کروڑ ملازمین کا روزگار!

  



ایپٹما(آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن) کے چیئرمین نے ملوں کے لئے قدرتی گیس کی بحالی کے فیصلے کا خیر مقدم کیا اور کہا ہے کہ اس سے ایک کروڑ ملازمین کے روزگار کو تحفظ ملا ہے اور ٹیکسٹائل کے شعبہ کو زرمبادلہ کمانے کا موقعہ مل گیا ہے۔ وزیراعظم محمد نوازشریف سے ایپٹما کے وفد کی ملاقات میں یہ فیصلہ ہوا اور نوٹیفکیشن کے ذریعے ٹیکسٹائل کے شعبہ کو 8گھنٹے روزانہ گیس فراہم کی جانے لگی ہے۔ بقول ایپٹما اس سے صنعت کا جام پہیہ پھر سے چلنا شروع ہو گیا ہے اور صنعت بند ہونے سے بچ گئی کہ گیس نہ ملنے کے باعث ٹیکسٹائل کی پیداوار رک گئی جس سے ایک کروڑ ملازمین کا روزگار داؤ پر لگا اور پانچ ارب ڈالر کا زرمبادلہ آنے سے رہ گیا تھا۔ وزیراعظم کے اقدام سے یہ صورت حال بہتر ہو گئی ہے، اگر اس شعبہ کی سرپرستی ہو اور گیس ملتی رہے تو زرمبادلہ کی آمدنی بذریعہ برآمد چودہ ارب ڈالر سالانہ تک پہنچ سکتی ہے کہ دنیا میں پاکستان کی ٹیکسٹائل مصنوعات کو بہت پسند کیا جاتا ہے۔

وزیراعظم کے اس فیصلے کی تحسین بجا، لیکن یہ بھی ضروری ہے کہ اس کے نتیجے میں گھریلو صارفین متاثر نہ ہوں اور پھر سی این جی کی صنعت بھی تو بند ہوئی اور صارفین سستے ایندھن سے محروم ہوئے ہیں۔اس طرف بھی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ وزیراعظم کو ہر ایک کا خیال رکھنا ہوگا جو گیس کے نئے ذخیروں کی دریافت اور ایل این جی کی جلد درآمد سے ممکن ہے۔

مزید : اداریہ


loading...