تیسرے اور آخری مرحلے میں آج 16نشستوں کے لیے ووٹ ڈالے جائیں گے

تیسرے اور آخری مرحلے میں آج 16نشستوں کے لیے ووٹ ڈالے جائیں گے

سرینگر(کے پی آئی)مقبوضہ کشمیر میں انتخابات کے تیسرے اور آخری مرحلے میں منگل کو 16نشستوں کے لیے ووٹ ڈالے جائیں گے ۔اسمبلی انتخابات کے تیسرے مرحلے کیلئے انتخابی مہم اختتام پذیر ہوگئی ۔اس مرحلہ میں وزیر اعلی عمر عبداللہ سمیت143امیدواروں کی سیاسی تقدیر کا فیصلہ 9دسمبر کو ہوگاجبکہ مجموعی طور پر 13لاکھ سے زائد رائے دھندگان ووٹ ڈالنے کے اہل ہونگے ۔16نشستوں پرہو رہے انتخابات کیلئے مجموعی طور پر 1781پولنگ مراکز کا قیام بھی عمل میں لایا گیا ہے ۔ادھر انتخابات کے تیسرے مرحلے میں ریکارڈ 500فورسز کی اضافی کمپنیوں کو تعینات کرنے کا انکشاف بھی ہوا ہے ۔ الیکشن کے تیسرے مرحلے کیلئے چناو مہم اتوار کی شام اختتام کو پہنچی ۔ 16نشستوں پر مجموعی طور پر 143امیدوار میدان میں ہیں جبکہ ان کی سیاسی تقدیر کا فیصلہ 13لاکھ69ہزار 102رائے دھندگان کریں گے جن میں 7لاکھ 17ہزار839مرد اور 6لاکھ 51ہزار245خواتین شامل ہیں ۔

عداد و شمار سے پتہ چلتاہے کہ ضلع بارہمولہ کی7نشستوں پر مجموعی طور 5لاکھ 91ہزار875ووٹر ہیں جن میں حلقہ انتخاب اوڑی میں74721، رفیع آباد میں80165، سوپورمیں ایک لاکھ3782، سنگرامہ میں 66169، بارہمولہ میں 82937 ، گلمرگ میں 94699اور حلقہ انتخاب پٹن میں 89412رائے دھندگان ووٹ ڈالنے کے اہل ہونگے ۔ان اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ ضلع بڈگام کی5نشستوں میں مجموعی طور پر 4لاکھ45ہزار 208رائے دھندگان الیکٹرانک ووٹنگ مشین کا بٹن دبانے کے اہل ہونگے جن میں حلقہ انتخاب چاڈورہ میں84212، بڈگام میں ایک لاکھ 3634، بیروہ میں 92996، خانصاحب میں 86018 اور حلقہ انتخاب چرارشریف میں 78348 ووٹر ہیں ۔ادھر 9دسمبر کو ضلع پلوامہ کی 4نشستوں پر بھی انتخابات منعقد ہونے والے ہیں جہاں مجموعی طور پر ووٹروں کی تعداد3لاکھ32ہزار 19ہے جن میں سے حلقہ انتخاب ترال میں 34129، پانپور میں 78189، پلوامہ میں 79167اور حلقہ انتخاب راجپورہ میں90554ووٹر ہیں ۔ الیکشن کمیشن نے مجموعی طور پر رائے دھندگان کیلئے 3اضلاع میں 1781پولنگ مراکز کا قیام عمل میں لایا ہے ۔ ضلع بارہمولہ میں825پولنگ مراکز کا قیام عمل میں لایا گیا ہے جن میں سے اوڑی حلقہ انتخاب میں 129، رفیع آباد میں107، سوپور میں134، سنگرامہ میں93، بارہمولہ میں 116 ، گلمرگ میں 129 اور پٹن نشست کیلئے118پولنگ مراکز شامل ہیں ۔بڈگام میں مجموعی طور پر547انتخابی مراکز کا قیام عمل میں لایا گیا جن میں حلقہ انتخاب چاڈورہ کیلئے99،بڈگام میں 126، بیروہ مین120، خانصاحب میں ق109اور چرار شریف میں 93پولنگ مراکز قائم کئے گئے ہیں ۔ضلع پلوامہ میں پولنگ مراکز کی تعداد 409ہے جن میں سے راجپورہ نشست کیلئے107، پلوامہ کیلئے98، پانپور میں 103اور ترال میں 101پولنگ مراکز قائم کئے گئے ہیں ۔انتخابی میدان میں 143زامیدواروں میں سے وزیر اعلی عمر عبداللہ بھی شامل ہیں جو حلقہ انتخاب بیروہ سے پارٹی کی نمائندگی کررہے ہیں جبکہ کئی سابق وزیر اور موجودہ ممبران اسمبلی بھی اس فہرست میں شامل ہیں ۔وزیر اعلی کے چاچا اور سابق وزیر ڈاکٹر شیخ مصطفی کمال حلقہ انتخاب گلمرگ سے انتخابی دوڑ میں ہیں جبکہ ان کے کابینہ کے ساتھی اورنیشنل کانفرنس کے امیدوار و سابق وزیر خزانہ عبدالرحیم راتھر چرار شریف، کانگریس کے تاج محی الدین اوڑی ، وزیر سیاحت غلام حسن میر گلمرگ ، راجیہ سبھا کے دو ممبران محمد شفیع اوڑی حلقہ انتخاب اوڑی سے اور غلام نبی رتن پوری پلوامہ سے انتخابی دوڑ میں شامل ہیں ۔کانگریس کے ریاستی صدر پروفیسر سیف الدین سوز کے فرزند سلمان سوز بارہمولہ ، سابق وزیر جاوید مصطفی میر چاڈورہ ، آغاروح اللہ بڈگام اور سابق وزیر حکیم محمد یاسین خانصاحب سے انتخابات لڑ رہے ہیں ۔پی ڈی پی کے ممبر اسمبلی بشارت بخاری سنگرامہ ، ڈاکٹر شفیع وانی بیروہ ، مشتاق احمد شاہ ترال ، محمد خلیل بند پلوامہ ،ظہور احمد میر پانپور کے علاوہ نیشنل کانفرنس کی ٹکٹ پرسابق وزیر جاوید احمد ڈار رفیع آباد ، حاجی محمد اشرف گنائی سوپور سے اپنی نشستوں کا دفاع کریں گے ۔ادھر اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ 16نشستوں پر ہو رہے انتخابات کیلئے پہلی مرتبہ 500فورسز کی اضافی کمپنیوں کو تعینات کیا جائے گاجبکہ اس سے قبل انتخابات کے پہلے اور دوسرے مرحلے میں دونوں بار 400فورسز کمپنیوں کو تعینات کیا گیا تھا ۔

مزید : عالمی منظر


loading...