ملزمان نے پولیس سے ملی بھگت کرکے 86مقدمات کی فائلیں ٹھکانے لگوادیں

ملزمان نے پولیس سے ملی بھگت کرکے 86مقدمات کی فائلیں ٹھکانے لگوادیں

  



 شیخوپورہ(بیورو رپورٹ)معلوم ہوا ہے کہ جعلی ادویات اور جعلی کھادوں کا کاروبار کرنے والے با اثر افراد نے پولیس سے ملی بھگت کرکے 86مقدمات کی فائلیں ہی ٹھکانے لگوادیں جس کی وجہ سے کئی برس گزر جانے کے باوجود ان مقدمات کے چالان سول ججوں اور جوڈیشل مجسٹریٹوں کی عدالتوں میں آج تک پیش نہیں ہوسکے حالانکہ پولیس رولز کے تحت ہر مقدمہ کا چالان 14روز میں عدالت میں پیش کرنا ضروری ہوتا ہے اور اگر 14روز میں یہ چالان مکمل نہ ہو تو اس کی تکمیل کیلئے تفتیشی افسر کو مجاز عدالت سے مہلت لیناپڑتی ہے، باخبر ذرائع نے بتایا ہے کہ جعلی کھادوں اور زرعی ادویات کے یہ مقدمات اسسٹنٹ کمشنروں ، پرائس کنٹرول مجسٹریٹوں اور محکمہ زراعت کے افسروں کے علاوہ متاثرہ کاشتکاروں کی رپورٹ پر درج کئے گئے تھے جن کے چالان جعلسازی کے مافیا نے مکمل ہو کر عدالتوں میں پیش نہیں ہونے دیئے، اس بارے میں ڈسٹرکٹ پبلک پراسیکیوشن کے حکام نے ڈی پی او شیخوپورہ سمیت تمام اعلیٰ حکام کو آگاہ کردیا ہے حیرت انگیز بات یہ ہے کہ ان مقدمات میں سال 2007-08-09-10 کے دوران درج ہونے والے 13مقدمات بھی شامل ہیں جو بااثر تاجروں کے خلاف درج ہوئے تھے۔

مزید : علاقائی