دو جماعتوں کی سیاسی جنگ سے نقصان عوام کا ہو رہا ہے ،سیاستدان

دو جماعتوں کی سیاسی جنگ سے نقصان عوام کا ہو رہا ہے ،سیاستدان

  



 لاہور(رپورٹنگ ٹیم+جاوید اقبال+لیاقت کھرل+حنیف خان+محمد نواز سنگرا)سیاسی جنگ سیاست سے بڑھ کر دو جماعتوں کی لڑائی بن گئی ہے جس سے نقصان عوام کا ہو رہا ہے۔فیصل آباد میں کشیدگی سے حالات خانہ جنگی کیطرف چلے گئے ہیں،دنوں فریقین کو اعتدل کی راستہ اختیار کرنا چاہیے۔عوام کی جان و مال کی حفاظت حکومت کی ذمہ داری ہے۔جمہوریت کو نقصا ن ہوا تو نواز شریف اور عمران خان برابر کے ذمہ دار ہوں گے ۔ان خیالات کا اظہار مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے ’’ روز نامہ پاکستان ‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ہے۔ تحریک انصاف کے مرکزی رہنما عارف علوی نے کہا کہ حکومت تشدد پر اتر آئی ہے اور پر امن احتجاج کی رہ میں رکاوٹیں ڈالنا آئین پاکستان کیخلاف ہے۔فیصل آباد میں تشدد کی ذمہ دار حکومت ہے۔ مسلم لیگ (ن )رہنما راجہ ظفر الحق نے کہا کہ عمران خان بتائیں کہ وہ پاکستان میں جلاؤ گھیراؤ کر ا کر اور لاشوں پر سیاست کر کے کس کے ایجنڈے پر کام کر رہے ہیں ان کی اس منفی سیاست کے باعث ملک میں سرمایہ کاری بند ہو گئی ہے اور چین جیسا مخلص دوست ہم سے دور ہوتا جا رہے۔فیصل آباد میں عمران خان نے جس طرح کی روایت ڈالی ہے ملک کی پارلیمانی روایات اس کی اجازت نہیں دیتیں عمران خان ہر چیز کا ختم کر کے راتوں رات وزیر بننا چاہتے ہیں مگر انہیں عوام سے مینڈیٹ لے کر آنا ہو گا۔ مسلم لیگ (ن)کے رہنما شیخ روحیل اصغر نے کہا کہ عمران خان جس طرح کی زبان استعمال کرتے ہیں اس وجہ سے پر تشدد کارروائیوں میں اضافہ ہوا ہے۔وزیر اعظم نے کارکنوں کو پر امن رہنے کا حکم دیا ہے۔فیصل آباد میں ہلاک ہونے والے شخص پر مکمل تفتیس ہونی چاہیے اور ذمہ داروں کو کٹہرے میں لانا چاہیے۔جماعت اسلامی کے رہنما فرید پراچہ نے کہا کہ سیاسی جنگ میں حکومت اور احتجاجی فریقین بن گئے ہیں اور اب یہ سیاسی جنگ دو جماعتوں کی ذاتی جنگ بن چکی ہے جس میں نقصان عوام کا ہو رہا ہے۔حالات خانہ جنگی کی طرف جا رہے ہیں فیصل آباد میں ہلاکت کی جوڈیشل انکوائری ہونی چاہیے اور ذمہ داروں کا کڑا احتساب ہونا چاہیے اور دونوں جماعتوں کو مذاکرات کے راستے پر چلنا چاہیے۔اے این پی کے سنیٹرحاجی عدیل نے کہا کہ حکومت اور عمران خان دونوں طرف سے حماقت ہو رہی ہے فیصل آباد کا واقعہ افسوسنا ک ہے۔پر امن احتجاج کو روکنا ،مخالف کو گالیاں دینا اور نعرے لگانا اچھی بات نہیں ہے سیاسی جنگ کو سیاست تک محدود رکھنا چاہیے۔دونوں فریقین اعتدال کی رہ پر چلتے ہوئے شرائط ختم کرتے ہوئے سیز فائر کر اعلان کر کے بات چیت کرنی چاہیے ۔حکومت کی ذمہ داری ہے کہ لوگوں کی جان ومال کو تحفظ فراہم کرے۔پیپلز پارٹی کے رہنما ندیم افضل چن نے کہا کہ فیصل آباد واقعہ کے بعد حکومت کا چلنا مشکل ہو گیا ہے ،حالات حکومتی کنٹرول سے باہر ہوتے جا رہے ہیں جمہوریت کو نقصان پہنچا تو نواز شریف اور عمران خان برابر کے ذمہ دار ہوں گے۔پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے دونوں پارٹیوں سے اپیل کی کہ وہ محاذ آرائی کی سیاست سے پرہیز کریں کیونکہ اس سے ہمارے سیاسی نظام پر خطرناک اثرات مرتب ہو سکتے ہیں اگر انہوں نے ہوش کے ناخن نہ لئے تو ایسی سیاسی دشمنی ملک کو خانہ جنگی کی طرف لے جائے گی فیصل آباد کے حالات و واقعات اس طرف بھی اشارہ کرتے ہیں کہ حکومتی پارٹی نے اپنے کارکنوں کو ایک منصوبہ بندی کے تحت تحریک انصاف کے کارکنوں کے سامنے لا کھڑا کیا تا کہ انکو ڈرا دھمکا کر بھگا دیا جائے، لیکن ایسا نہ ہونے کی وجہ سے جھگڑا ہوا جس میں ایک قیمتی جان ضائع ہوئی۔ مسلم لیگ(ق)کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سنیٹر کامل علی آغا نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ مسلم لیگ نواز کی حکومت ہر محاذ پر فیل ہو چکی ہے ہر کام لاٹھی گولی کی سرکار پر کرانا چاہتے ہیں ۔لاہور اسلام آباد کے بعد فیصل آباد میں بھی حکومت نے لاشیں گرائی ہیں اب اس حکومت کا جانا اس کا مقدر بن چکا ہے حکومت کی غلط پالیسیوں کیوجہ سے معیشت تباہ ہو رہی ہے حکومت فوری مستعفی ہو جائے ۔ پیپلز پارٹی شعبہ خواتین پنجاب کی صدر بیگم بیلم حسین نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن نے ماضی سے سبق نہیں سیکھا، فیصل آباد میں سانحہ ماڈل ٹاؤن کا ٹریلر چلاکر ثابت کردیا ہے کہ ابھی مسلم لیگ ن کو سیاسی تربیت کی ضرورت ہے، پیپلز پارٹی نے دھرنا اور لانگ مارچ والوں سے ن لیگ کو بچایا لیکن غیر جمہوری رویے سے ن لیگ مسلسل غلطیوں پر غلطیاں کررہی ہے۔ اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی میاں محمود الرشید نے کہا کہ حکمرانوں نے ریاستی دہشت گردی ، ظلم و بربریت کی ’’نئی داستان‘‘ رقم کر دی ہے ‘بندوق اور گولی سے تحریک انصا ف کے کارکنوں کو خوفزدہ نہیں کیا جا سکتا ‘ حکمران تحریک انصا ف پر تشدد کرکے اپنی موت کو دعوت دے رہے ہیں‘ ریاستی دہشت گردی کے ذمہ دار نوازشریف اور شہبازشریف ہیں‘جنہیں ہر ظلم کا حساب دینا ہو گا اور کارکنوں کی ہلاکت کا مقدمہ بھی حکمرانوں کے خلاف ہی درج کروائیں گے ۔

مزید : صفحہ اول


loading...