موجودہ سیاسی نظام عوام کو جمہوریت کے ثمرات دینے کے قابل نہیں ہے ، محمد کامران

موجودہ سیاسی نظام عوام کو جمہوریت کے ثمرات دینے کے قابل نہیں ہے ، محمد کامران

لاہور(خبر نگار خصوصی )موو آن پاکستان کے چیئر مین محمد کامران نے کہا ہے کہ پاکستان میں حقیقی جمہوریت لانے کے لیے مثبت سوچ کی حامل سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا ہونے کی ضرورت ہے موجودہ سیاسی نظام عوام کو جمہوریت کے ثمرات دینے کے قابل نہیں ہے اس کو تبدیل کر کے ایک ایسا نظام وضع کرنے کی اشد ضرورت ہے جو عام آدمی کی زندگی کو آسان کر سکے

۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ حکمرانوں کی سوچ بادشاہت کی سوچ ہے وہ جمہوریت کا نام لیتے ہیں لیکن ان کا ایک بھی عمل جمہوری دکھائی نہیں دیتا ہے حکمرانوں کے اسی انداز نے نہ صرف جمہوریت بلکہ ملک کے نظام کا بیڑہ غرق کر کے رکھ دیا ہے ان کے کاروباری انداز سیاست کی وجہ سے ملک کے عوام بد حالی اور غربت کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں ملک کی معیشت کا پہیہ رک چکا ہے جبکہ حکومتی وزراء کے پاس زبانی جمع خرچ کے سوا عوام کو بتانے کے لیے کچھ بھی نہیں ہے۔

پاکستان کے عوام بھوک اور افلاس کا شکار ہیں لیکن حکمرانوں کی عیاشیاں جاری ہیں ایسے حالات میں ملک کی تمام مثبت سوچ کی حامل جماعتوں کو پاکستان ڈیمو کریٹک الائنس میں شامل ہو کر اپنا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے ان کا مزید کہنا تھا کہ ملک میں امن و امان کی بگڑتی ہوئی صورتحال کے با وجود حکمران اپنی کرسی بچانے کے لیے جرائم پیشہ افراد کیساتھ گٹھ جوڑ کر رہے ہیں ملک کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے والے حکمرانوں کے ساتھی بنے ہوئے ہیں کرپشن کا خاتمہ کرنے والے اداروں کو حکمرانوں نے گھر کی لونڈی بنا لیا ہے غریب کے لیے ملک میں ایک قانون اور امیر کے لیے دوسرا قانون ہے قاتل حکومت کی چھتری تلے بیٹھے ہوئے ہیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...