دہشتگردی نے نمٹنے کیلئے امت مسلمہ اتحادو اتفاق قائم کرے، ایازصادق

دہشتگردی نے نمٹنے کیلئے امت مسلمہ اتحادو اتفاق قائم کرے، ایازصادق

  

 اسلام آباد(آئی این پی)سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے دہشت گردی اور انتہا پسندی کے چیلنجز کا سامنا کرنے کے لئے امت مسلمہ میں اتفاق اور اتحاد قائم کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام امن و آشتی کا مذہب ہے اور اس کو دہشت گردی یا انتہا پسندی سے منسوب نہیں کیا جا سکتا۔عراق کے انڈر سیکرٹری برائے قانونی امور و کثیر جہتی تعلقات ڈاکٹر عمر البرزنجی سے پارلیمنٹ ہاؤس میں گزشتہ روز ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے سپیکرقومی اسمبلی نے کہا کہ اسلام دہشت گردی کی سختی سے ممانعت کرتا ہے اور اس کی تمام اشکال اور توضیحات کی مذمت کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مغربی میڈیانے اسلام کا امن پسند چہرہ مسخ کرکے پیش کیا جو حقائق کے منافی ہے۔انہوں نے پارلیمانی سفارتکاری کے ذریعے مسلم امہ کے مابین تعلقات کو مزید مستحکم کرنے کے لئے اپنی کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ وہ بین الپارلیمانی یونین کے مسلم اراکین سے رابطے میں ہیں اور اگلے سال ا ہونے والی کانفرنس میں فلسطینیوں پر ڈھائے جانے والے اسرائیلی مظالم کے خلاف متفقہ قرار دادپیش کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت اس عفریت کے خاتمے کے لئے پر عزم ہے اور اس سلسلے میں ملٹری آپریشن ضرب عضب آخری دہشت گرد کے خاتمے تک جاری رہے گا۔ڈاکٹر عمر البرزنجی نے سپیکر قومی اسمبلی کی جانب سے نیک خواہشات پر ان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ عراق بھی پاکستان کے ساتھ اپنے تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے اور انہیں مزید مستحکم کرنے کا خواہاں ہے۔ انہوں نے اسلام کے خلاف منفی پروپیگنڈا کو زائل کرنے کی تجویز سے اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ عراق بھی اس سلسلے میں اقدامات اٹھائے گا۔انہوں کستانی تاجروں اور صنعت کاروں کو عراق میں سرمایہ کاری کے مواقعوں سے فائدہ اٹھانے کی دعوت بھی دی۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -