شرانگیز مواد کی اشاعت ، قادیانی ملز م کی درخواست ضمانت مسترد

شرانگیز مواد کی اشاعت ، قادیانی ملز م کی درخواست ضمانت مسترد

لاہور(نامہ نگارخصوصی)سپریم کورٹ نے شرانگیز اور گستاخانہ مواد کی اشاعت میں ملوث قادیانی ملز م طاہر مہدی کی درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ بد قسمتی سے ہمارے معاشرے میں جس معاملے میں مذہب آ جاتا ہے ، وہاں قوانین پیچھے چلے جاتے ہیں ۔سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں جسٹس آصف سعید خان کھوسہ کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے ملزم طاہر مہدی کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔ایڈیشنل پراسکیوٹر جنرل اسجد جاوید گھرال نے ریکارڈ بنچ میں جمع کراتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ ملزم طاہر مہدی کے قبضے سے گستاخانہ مواد برآمد ہوا ، جو مواد برآمد ہوا اس سے واضح طور پر معاشرے میں شرانگیزی پھیلتی ہے،ملزم کے خلاف پہلے بھی اسی نوعیت کا مقدمہ درج ہو چکا ہے ،اگر ملزم کو ضمانت دی گئی تو خدشہ ہے کہ وہ رہا ہو کر دوبارہ فساد پیدا کریگا۔ اس پر جسٹس آصف سعید خان کھوسہ نے ریمارکس دیئے کہ بدقسمتی سے ہمارے معاشرے میں جس میں معاملے میں مذہب آ جاتا ہے، وہاں قوانین پیچھے چلے جاتے ہیں، عدالت نے ملزم طاہر مہدی کی درخواست ضمانت مسترد کرتے ہوئے محکمہ پراسکیوشن کو ہدایت کی کہ ملزم کے خلاف مقدمے کا چالان ٹرائل کورٹ میں پیش کیا جائے اور لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے سے متاثر ہوئے بغیر مقدمے کا ٹرائل کیا جائے۔

توہین عدالت

مزید : صفحہ آخر


loading...