گوجرانوالہ اراکین اسمبلی اور افسروں کا گٹھ جوڑ کروروں کے ٹھیکے چہیتوں میں باٹنے کا انکشاف

گوجرانوالہ اراکین اسمبلی اور افسروں کا گٹھ جوڑ کروروں کے ٹھیکے چہیتوں میں ...

  

گوجرانوالہ(بیورورپورٹ)گوجرانوالہ میں بعض ممبران اسمبلی کی آشیرباد سے محکمہ لوکل گورنمنٹ کے افسران اورٹھیکے داروں کے مبینہ گٹھ بندھن سے کروڑوں روپے مالیت کے ترقیاتی منصوبوں کے ٹینڈرز بغیرتشہیر اوربولی کے چہیتوں کوبانٹنے کاانکشاف ہوا ہے جس میں ایک مشترکہ ’’پلان‘‘ کے تحت کام کرنے والے ٹھیکے داروں سے ’’باقاعدہ‘‘طے شدہ کمیشن وصول کیاگیا جبکہ بیشتر ٹھیکے داروں نے ٹینڈروں کوبندربانٹ قراردیتے ہوئے ضلعی اورڈویژنل سربراہ سے اس کے ذمہ داروں کے خلاف سخت ترین کارروائی کامطالبہ کیا ہے ذرائع کے مطابق محکمہ لوکل گورنمنٹ کمیونٹی ڈویلپمنٹ کے ایکسین نے حلقہ قومی اسمبلی 95کے تقریباً5کروڑروپے مالیت کے 31ترقیاتی کاموں کے ٹینڈرز بغیرقانونی پراسس کے اپنے چہیتے ٹھیکے داروں محمدناصر‘محمداکرام چہل اورابراہیم وغیرہ کوبھاری کمشن پرالاٹ کیے جبکہ حلقہ قومی اسمبلی 97کے 4کروڑ50لاکھ روپے مالیت کے 3منصوبہ جات شاہد‘عمران شریف اورریاض اینڈ کمپنی کودیئے گئے جس پرٹینڈر کمیٹی کے ممبرڈی اوایف اینڈ پی نے ٹیکنیکل سیکشن (ٹی ایف )نمبر نہ ہونے پران پراعتراض لگا دیا جس پرٹینڈروں کے کنوینئرایکسین لوکل گورنمنٹ نے اپنے سٹاف سے ملی بھگت کرکے سابقہ تاریخوں میں اس کااندراج کروایاجس کی وجہ سے ٹینڈرز بھی مقررہ وقت سے کئی گھنٹے بعد تاخیرسے کھولے گئے پیپررولز کے مطابق بیس لاکھ روپے سے کم مالیت کے کام ہونے کی وجہ سے ان کی تفصیل ڈی سی آفس اورمتعلقہ دفترمیں آویزاں کی جاتی ہے جوکہ ملی بھگت اوربندربانٹ کے پلان کی وجہ سے نہ کی گئی تھی جبکہ بھاری نذرانوں کی عدم ادائیگی سے انکاری بیشترٹھیکیداروں کوکام نہیں دیئے گئے تاہم ایکسین لوکل گورنمنٹ شہبازچیمہ کاکہنا ہے کہ ترقیاتی منصوبوں کے فنڈز ممبران اسمبلی لاتے ہیں اس لئے منصوبہ جات ان کی سفارش پرہی ٹھیکیداروں کوالاٹ ہوتے ہیں نذرانوں والی میں صداقت نہ ہے۔

ٹھیکے

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -