خود کفیل ہونے کے دعوےدار امریکہ کی تیل کی صنعت کو بڑا دھچکا‘امریکہ سعودی عرب سے تیل درآمد کرنے پر مجبور

خود کفیل ہونے کے دعوےدار امریکہ کی تیل کی صنعت کو بڑا دھچکا‘امریکہ سعودی عرب ...
خود کفیل ہونے کے دعوےدار امریکہ کی تیل کی صنعت کو بڑا دھچکا‘امریکہ سعودی عرب سے تیل درآمد کرنے پر مجبور

  


واشنگٹن (این این آئی)عالمی منڈی میں امریکی خام تیل کی قیمت اچانک 2009ء کے بعد نچلی ترین سطح پر آئی تو امریکا کی تیل کی صنعت کو ایک بڑا دھچکا لگا ہے۔ اسی روز امریکی معیشت کو دوسرا بڑا جھٹکا اس وقت لگا جب امریکی آئل ایجنسی نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کیا کہ ذخیرہ ہونے والے امریکی تیل کی مقدار میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے جب کہ تیل کی پیدوار میں آئندہ سال کے وسط تک غیر معمولی کمی کا اندیشہ ہے، تاہم 2016ء کی آخری سہ ماہی میں امریکا میں تیل کی پیداوار میں اضافے کی خبر سامنے آ سکتی ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق امریکن آئل پروڈکشن انفارمیشن ایجنسی کی جانب سے جاری کردہ اعدا د وشمار میں بتایا گیا ہے کہ پیش آئند مالی سال کے دوران امریکی تیل کی پیداوار 8.8 ملین بیرل یومیہ رہے گی جب کہ سال رواں میں امریکا میں تیل کی پیداوار 9.3 ملین بیرل یومیہ ہے۔ امریکی تیل کی صنعت زوال کے جن اشاریوں کی نشاندہی کر رہی ہے اس سے یہ آشکار ہے کہ آنے والے چند مہینے امریکی تیل کی صنعت کے لیے ب±رے ثابت ہوں گے۔عالمی منڈی میں امریکل آئل پروڈکشن پلیٹ فارمز کی تعداد کم ہوتے ہوئے 545 پلیٹ فام پر آ گئی ہے۔ صرف ایک ہفتے کے دوران امریکی تیل کے پروڈکشن پلیٹ فارمز میں 10 پلیٹ فارمز کی کمی آئی ہے۔ امریکی تیل کی صنعت کے زوال کو سمجھنے کے لیے صرف یہ مثال ہی کافی ہے کہ ایک سال قبل عالمی کروڈ آئل میں امریکی تیل کے 1609 پلیٹ فارم سرگرم تھے۔امریکی تیل کی صنعت میں ہونے والا اتار چڑھاو¿ ماضی میں لگائے گئے تخمینوں کے برعکس ہے۔ امریکی آئل پروڈکشن ایجنسی کی جانب سے ایک سال پیشتر یہ کہا گیا تھا کہ امریکا 2020ء تک یومیہ 12 ملین بیرل تیل پیدا کرتا رہے گا۔

مزید : بزنس


loading...