مونا لیزا کے نیچے ایک اور تصویر موجود ہونے کا دعویٰ

مونا لیزا کے نیچے ایک اور تصویر موجود ہونے کا دعویٰ
مونا لیزا کے نیچے ایک اور تصویر موجود ہونے کا دعویٰ

  

پیرس (ویب ڈیسک) فرانسیسی سائنس دان پاسکال کوت نے دعویٰ کیا ہے۔ انہوں نے روشنی کی انعکاسی تکنیک کا استعمال کرتے ہوئے لیوناردو داونچی کی مشہور تصویر مونالیزا کے نیچے ایک دوسری تصویر دریافت کرلی ہے۔ پاسکال کوت کے مطابق انہوں نے اس تکنیک کی مدد سے دس سال تک اس پینٹنگ کا تجزیہ کیا۔ مسز کوت نے کہا کہ اس ٹیکنالوجی کے تحت کئی قسم کی روزشنیاں پینٹنگ پر ڈالی جاتی ہیں اور پھر ایک کیمرا روشنیوں کے انعکاس کی پیمائش کرتا ہے۔ مونالیزا کی پینٹنگ نصف صدی سے بھی زیادہ عرصے سے سائنسی تحقیق کا موضوع رہی ہے اور حال میں اسے انفراریڈ اور ملٹی سپیکٹرل سکیننگ کے تحت جانچا گیا ہے لیکن پاسکال کوت کا دعویٰ ہے کہ ان کی تکنیک سے پینٹنگ میں بہت اندر تک دیکھنے میں کامیابی ملی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب ہم یہ جان سکتے ہیں کہ پینٹ کی مختلف تہوں کے درمیان کیا ہورہا تھا اور اب ہم کسی پیاز کی طرح س کی ہر تہہ کھول سکتے ہیں۔ مونا لیزا کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ اسے لیوناردو نے 1503 اور 1517ءکے درمیان تخلیق کیا تھا جب وہ فرانس کے شہر فلورنس میں مقیم تھے۔ مونا لیزا کی شناخت بھی بحث کا موضوع ہی ہے۔ عام طور پر یہ خیال ظاہر کیا گیا ہے کہ یہ فلورنس کے ریشم کے تاجر کی اہلیہ لیزا گیراردینی ہیں لیکن کوت نے کہا کہ میری جانچ کے نتائج نے لیونارڈو کے شاہکار کے بارے میں بہت سے اساطیر کو ہمیشہ کیلئے پاش پاش کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب میں لیزا گیراردینی کی تصویر کی ازسرنوتشکیل کی تو میں ایک ایسی تصویر کے سامنے تھا جو آج کی مونالیزا سے بالکل مختلف ہے۔ یہ وہی عورت نہیں ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -