بھارت کا 4 ٹانگوں والا ’شیطان‘

بھارت کا 4 ٹانگوں والا ’شیطان‘
بھارت کا 4 ٹانگوں والا ’شیطان‘

  

نئی دلی (نیوز ڈیسک) جسمانی معذوری یا بگاڑ کے ساتھ اس دنیا میں آنے والے افراد دوسروں کی مدد اور تعاون کے مستحق ہوتے ہیں لیکن بدقسمتی سے انہیں عموماً بدترین تضحیک اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ بھارتی نوجوان ارون راجپوت بھی ایک عجیب و غریب جسمانی بگاڑ کے ساتھ پیدا ہوا، اور لوگوں نے اس کے ساتھ ہمدردی کی بجائے اسے دنیا میں شیطان کا روپ قرار دے ڈالا۔

ارون کی پیدائش ہوئی تو اس کے والدین اسے دیکھ کر ساکت رہ گئے، اس بچے کی دو بجائے چار ٹانگیں تھیں۔ دو نارمل ٹانگوں کے علاوہ دو اضافی ٹانگیں اس کی پشت پر موجود تھیں۔ ارون اب 20 سال کا ہوچکا ہے لیکن یہ 20 سال اس کی زندگی میں بے پناہ تکلیف اور تذلیل کا عرصہ رہے ہیں۔ ریاست اتر پردیش کے شہر فرخ آباد سے تعلق رکھنے والے ارون کا کہنا ہے کہ کوئی دن ایسا نہیں جاتا کہ اس کی بدترین تضحیک یا تذلیل نہ کی جاتی ہو، حتیٰ کہ بعض اوقات مارپیٹ کا نشانہ بھی بنایا جاتا ہے۔ ارون کے گاﺅں والوں نے نہ صرف اسے شیطان قرار دے رکھا ہے بلکہ اس کے والدین کو بھی مردود قرار دے رکھا ہے۔

مزیدجانئے: ’کیا سعودی ٹی وی میزبان ہاں بول دے گی‘

ارون کا کہنا ہے کہ وہ ہر روز یہ خواب دیکھتا ہے کہ ایک دن اس کا علاج کیا جائے گااور وہ بھی عام انسانوں کی طرح دو ٹانگوں کا مالک بن جائے گا۔ اس کی معمر والدہ لیلا دیوی کہتی ہیں کہ وہ غریب لوگ ہیں اور محنت مزدوری کرکے اپنا پیٹ پالتے ہیں۔ کئی سال سے وہ اس انتظار میں ہیں کہ کوئی درد دل رکھنے والا ان کی مدد کرے گا اور ان کے بچے کی سرجری کرکے اسے بھی عام انسانوں جیسا بنادے گا۔ وہ کہتی ہیں کہ بھارتی سرکار اور حتیٰ کہ ان کے اپنے علاقے، گاﺅں کے لوگوں اور عزیز و اقارب نے بھی کبھی ان کی خبر نہیں لی اور وہ منتظر ہیں کہ کب ان کی قسمت بدلنے والا کوئی معجزہ رونما ہوگا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -