پیداواری لاگت کم کرنے کیلئے موثراور فوری اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے : پیاف

پیداواری لاگت کم کرنے کیلئے موثراور فوری اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے : پیاف

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (کامرس رپورٹر)پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) نے کہا ہے کہ پیداواری لاگت بڑھنے سے صنعتوں کی شرح نمو کم ہو کر رہ گئی ہے جس سے صنعتکاروتاجر برادری پریشانی کا شکار ہیں کیونکہ بڑھتے ہوئے بے جا ٹیکس اور گیس و بجلی کی قیمتوں میں خطے کے دیگر ممالک کی نسبت اضافہ سے اشیاء کی پیداواری لاگت دن بدن بڑھ رہی ہیں جس سے بالواسطہ طور پر عوام متاثر ہورہی ہے۔ پیداوار کم ہونے سے برآمدات بھی متاثر ہو رہی ہیں۔
اور برآمدات میں کمی سے تجارتی خسارہ بڑھتا جا رہا ہے۔ برآمدات بڑھانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کیے جائیں ۔ خطے میں دیگر ممالک کی طرح بزنس فرینڈلی پالیسیز ترتیب دی جائیں۔ صنعتوں کے لئے بجلی و گیس کے نرخ کم کیے جائیں ، مہنگی بجلی و گیس پیداواری لاگت میں اضافہ کا باعث ہے اور مہنگی اشیاء کے باعث بیرون ملک ان کی مانگ میں کمی اور برآمدات میں کمی واقع ہورہی ہے، ٹریڈ پالیسی میں مختص اربوں روپے کی رقم کو استعمال میں لاتے ہوئے پاکستانی اشیاء کیلئے بیرون ملک نئی مارکیٹس کو پروموٹ کیا جائے اور وہاں پاکستانی مصنوعات کی نمائش منعقد کی جائیں تاکہ ملکی برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ اور تجارتی خسارہ میں کمی ہوسکے ان خیالات کا اظہار چیئر مین پیاف عرفان اقبال شیخ نے سیئنر وائس چیئرمین تنویر احمد صوفی اور وائس چیئر مین خواجہ شاہزیب اکرم کے ہمراہ تاجروں اور صنعتکاروں کے ایک وفد سے میٹنگ کے دوران کیا۔عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ اگر برآمدات میں اسی طرح کمی واقع ہوتی رہی تو رواں مالی سال میں تجارتی خسارہ25ارب ڈالر سے تک بڑھنے کا خدشہ ہے جس سے ملک کے زرمبادلہ کے ذخائرمیں کمی اور حکومتی مشکلات میں مزیداضافہ ہوگا۔اس لیے حکومت کو اس ضمن میں موثراور فوری اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے تاکہ تجارتی خسارہ میں کمی ہوسکے۔

مزید :

کامرس -