ضرر رساں کیڑوں کے تدارک کی حکمت عملی سامنے لانابڑا چیلنج ہے:ڈاکٹراقرار احمد خان

ضرر رساں کیڑوں کے تدارک کی حکمت عملی سامنے لانابڑا چیلنج ہے:ڈاکٹراقرار احمد ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

فیصل آباد (آن لائن) زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر اقراراحمد خاں نے کہا ہے کہ ملک میں 40ارب روپے سے زائد کے پیٹسی سائیڈ بزنس کے باوجود فروٹ فلائی اور کپاس کے ضرر رساں کیڑوں کے موثر تدارک کی حکمت عملی سامنے لاناایک بڑا چیلنج ہے جس سے عہدہ برآ ہونے کیلئے انٹومالوجی کے ماہرین کو اپنا کردارادا کرنا ہوگا یہ بات انہوں نے زرعی یونیورسٹی کے شعبہ انٹومالوجی میں نئے آنیوالے طلباء وطالبات کے اعزاز میں استقبالیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی ،تقریب میں میں بی ایس سی (آنرز) ‘ایم ایس سی (آنرز) کے بالترتیب ساتویں ‘ تیسرے سمسٹراور پی ایچ ڈی کے طلبہ نے نئے آنیوالے نوجوانوں کو سٹیج پر دلچسپ اورخوبصورت پرفارمنس کے ذریعے خوش آمدید کہا۔

یونیورسٹی کے وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر اقراراحمد خاں ‘ ڈین کلیہ زراعت پروفیسرڈاکٹر محمد امجد اولکھ‘ ڈلہوز ی یونیورسٹی کینیڈا میں انٹرنیشنلائزیشن پروگرام کے اسسٹنٹ ڈین ڈاکٹر کرسٹوفرکٹلراور پروفیسرڈاکٹر قمر زمان نے خصوصی طو رپر شرکت کی۔ ڈاکٹر اقراراحمد خاں نے مزید کہا کہ شعبہ انٹومالوجی نے گزشتہ برسوں کے دوران غیرمعمولی ترقی کرتے ہوئے پورے ملک میں اپنی معتبر پہچان بنائی ہے جس میں اس کے سائنس دانوں کا کردار انتہائی اہم اور کلیدی رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم سب کو اپنی صلاحیتیں معاشرے کی بہتری کیلئے بروئے کار لاتے ہوئے مثبت تبدیلی کیلئے اپنا کردار ادا کرناہے۔ان کا کہنا تھا کہ 110سالہ پرانے ادارے میں کئی نابغہ روزگار شخصیات نے اپنا کردار بڑی خوبصورتی اور ذمہ داری کے ساتھ نبھایا ہے اور ہم بھی انہی کے نقش قدم پر چلتے ہوئے اپنا تعمیری کردار ادا کر رہے ہیں جسے آنے والے وقت میں یاد رکھا جائے گا۔ انہوں نے ویلکم پروگرام کے معیار کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ایک خوبصورت اور یادگارتقریب کا حصہ ہوتے ہوئے وہ خوشی محسوس کر رہے ہیں،۔ ڈلہوزی یونیورسٹی کینیڈا کے اسسٹنٹ ڈین انٹرنیشنلائزیشن ڈاکٹر کرسٹوفرکٹلر نے کہا کہ ان کی جامعہ نے زرعی یونیورسٹی کے ساتھ پلانٹ سائنسز میں مشترکہ ڈگری پروگرام کا آغاز کیا ہے جس میں کامیابی کے بعد اسے دوسرے شعبوں تک توسیع دی جا سکے گی۔ چیئرمین شعبہ انٹومالوجی ڈاکٹر محمد جلال عارف نے اپنے استقبالیہ خطاب میں کہا کہ امسال ابتدائی چار سمسٹر کے بعد انٹومالوجی میجر کا انتخاب کرنیوالے 70طلبہ 3.00پلس سی جی پی اے رکھتے ہیں اور 50سے زائد اشعبوں میں سے انٹومالوجی کا انتخاب بلاشبہ ایک بڑی کامیابی ہے۔ انہوں نے یونیورسٹی کی پھیلتی ہوئی عالمی نیٹ ورکنگ اور بڑھتی ہوئی رینکنگ میں وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر اقراراحمد خاں کے کلیدی کردار کو سراہتے ہوئے کہا کہ جہاں وہ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ہدایت پر صوبے کیلئے نئی زرعی پالیسی کے خدوخال ترتیب دے رہے ہیں وہیں وفاقی حکومت کے پالیسی پلیٹ فارم پر بھی کسان کا مقدمہ موثر انداز میں لڑ رہے ہیں۔ انہوں نے ڈاکٹر اقراراحمد خاں کوموجودہ دور کا ڈاکٹر محبوب الحق قرار دیتے ہوئے اُمید ظاہر کی کہ وہ جلد ہی زراعت کو پھر سے پائیدار بنیادوں پر کھڑا کرتے ہوئے اسے ایک منافع بخش کاروبار کے طو رپر متعارف کروانے میں کامیاب ہوجائیں گے جس سے دیہی ترقی کومضبوط بنیاد مہیا ہوگی۔ انہوں نے استقبالیہ تقریب کو شاندار قرار دیتے ہوئے منتظمین کے کردار کو بھی خصوصی طو رپر سراہا۔
#/s#

مزید :

کامرس -