اوورسیز پاکستانیوں کے مفادات

اوورسیز پاکستانیوں کے مفادات
اوورسیز پاکستانیوں کے مفادات

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

یہ بات بلاخوف تردید کہی جا سکتی ہے کہ سمندر پار مقیم افراد کا کردار خصوصی اہمیت کا حامل ہوتا ہے اور ان کی طرف سے بجھوائی جانے والی رقوم سے ملکی معیشت مستحکم بنیادوں پراستوار ہوتی ہے۔پاکستان جیسے ترقی پذیرملک میں سمندر پار افراد کی اہمیت دو چندہوتی ہے۔اگر ہم گرشتہ سال کی تر سیلات زر پر نظر ڈالیں تو ہمیں خوشگوارحیرت ہو گی کہ اوورسیز پاکستانیوں نے20ارب روپے سے زائد رقم اپنے وطن عزیز میں بھجوائی ہے۔ اوورسیز پاکستانی تارکین وطن نہیں۔وہ وطن سے دور ضرورہیں لیکن ان کے دل سے وطن کی محبت کسی طور کم نہیں ہوئی۔ ان کے جسم تو سمندر پار ہیں لیکن دل یہیں ہیں۔ پاکستان کے مسائل اوران کے حل میں ان کی بھر پور شمولیت ہے۔ وہ پاکستان کے بارے میں اتنے ہی متفکر رہتے ہیں، جتنے یہاں موجود پاکستانی ہوتے ہیں۔ امریکہ میں اپنے36 سالہ قیام کے پیش نظرمیں یہ بات پورے وثوق سے کہہ سکتاہوں کہ اوورسیز پاکستانیوں کے دل میں ہر وقت ملک کا ہی خیال رہتا ہے۔70 فیصد اوورسیز پاکستانیوں کے اہل خانہ تو پاکستان میں ہی رہتے ہیں اور وہ چند سال بعد یہاں چکرلگاتے ہیں لیکن جو پاکستانی دہائیو ں سے بیرون ملک مقیم ہیں ان کے دل سے بھی وطن کی محبت رتی بھر کم نہیں ہوئی۔
جس شخصیت نے سب سے پہلے اوورسیز پاکستانیوں کی اہمیت کو تسلیم کرتے ہوئے ان کے مسائل کے حل کیلئے عملی کوششوں کا آغاز کیا وہ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف ہیں ۔طویل عرصے جلا وطنی کی بدولت وہ اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل کی شدت اور گہرائی سے نجوبی آگاہ ہیں اور اسی احساس کے پیش نظر انہوں نے اوورسیز پاکستانیز کمیشن(او پی سی) پنجاب کے نام سے ایک ایسا ادارہ قائم کیا جس نے صرف ڈیڑھ سال میں ایک موثر فورم کی حیثیت اختیار کرلی ہے۔چیئر مین ہونے کی حیثیت سے وزیراعلیٰ نے اس ادارے کا انتظام وا نصرام چلانے کیلئے نہایت باریک بینی سے مخلص،محنتی،قابل اوراوورسیز پاکستانیوں کے مسائل کا ادراک رکھنے والے افراد پرمشتمل ٹیم تشکیل دی اور وزیراعلیٰ کے ویثر ن کے مطابق خدا کا شکر ہے کہ آج او پی سی پنجاب کو سمندرپار مقیم ہزاروں پاکستانیوں کے مسائل کو حل کرنے کا اعزاز حاصل ہوا ہے۔ اوورسیز پاکستانیوں کی خدمت کے جذبے کے تحت قائم کئے جانے والے اس ادارے نے مختصر عرصے میں جو معتبرمقام حاصل کیا ہے وہ وزیر اعلیٰ پنجاب کی شفقت اور مسلسل ر ہنمائی کے بغیر ممکن نہ تھا اورگزشتہ ڈیڑھ سال میںیہ ادارہ اوورسیز پاکستانیوں کو درپیش مسائل اور مشکلات کے حل کیلئے پوری تندہی سے کوشش کررہا ہے۔
زمین یا جائیداد پر ناجائرقبضے کا مسئلہ ہو یا وراثتی جائیداد کی تقسیم ،کاروباری معاہدے کی خلاف ورزی ہو یا پولیس کے معاملات،ریونیو کے مسائل ہوں یا انویسٹمنٹ کے بارے میں رہنما ئی، او پی سی ہر طرح سے سمندرپار پاکستانیوں کی مدد کیلئے مصر وف عمل ہے۔وزیراعظم محمد نوازشریف نے اپنے سابقہ دور حکومت میں گرین چینل کے ذریعے ائیر پورٹس پر اوورسیز پاکستانیوں کو سہولتیں فراہم کیں اور اسی روایت کو آگے بڑھاتے ہوئے محمد شہباز شریف کی قیادت میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کی صوبائی حکومت نے بھی پنجاب میں اوورسیز پاکستانیز کمیشن کا آئینی ادارہ قائم کیا۔ اوورسیز پاکستانیز کمیشن پنجاب کا قیام دیارغیر میں بسنے والے پاکستانیوں کے مسائل کے حل کیلئے وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی ایک شاندار کاوش ہے اوراس ضمن میں یہ بات قابل ذکر ہے کہ وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف خود ہر ماہ اس کمیشن کی کارکردگی کا جائزہ لیتے ہیں۔ او پی سی پنجاب کی کوششوں سے ابتک ایڈن ہاؤسنگ سکیم میں 90گھروں کا قبضہ ان کے مالک اوورسیز پاکستانیوں کے حوالے کردیاگیا ہے۔ہمارے لیے یہ بات قابل فخرہے کہ ہم ابتک موصول ہونے والی چھ ہزار سے زائد شکایات میں سے 50 فیصد کا ازالہ کر چکے ہیں۔
او پی سی میں مسائل کے حل کیلئے ایک سٹیٹ آف دی آرٹ سسٹم اپنا یا گیاہے۔پنجاب انفارمیشن ٹیکنا لوجی بورڈکی معاونت سے کمپلینٹ ویب پورٹل قائم کی گئی ہے۔ جہاں اوورسیز پاکستانی دنیا بھر سے اپنی شکایات کا اندرج کراسکتے ہیں۔اوپی سی شکایات متعلقہ اضلاع تک پہنچا کر ان کی بھر پور الیکٹرانک مانیٹرنگ کویقینی بناتاہے جہاں چیئرپرسنزکی قیادت میں ڈسٹرکٹ اوورسیز کمیٹیاں ان شکایات کے حل کیلئے تندہی سے کام کررہی ہیں۔
ادارے کی کارکردگی سے متاثرہوکرآزادجموں و کشمیر حکومت نے بھی سمندر پار مقیم بھائیوں کے مسائل کے حل کیلئے OPCپنجاب کا ماڈل اپنایاہے۔ جس میں OPC پنجاب نے پوری معاونت کی اور آزاد کشمیرکے افسران کیلئے اپنے ادارے میں تربیت کاخصوصی اہتمام کیا تھا۔ اوور سیز پاکستانیز کمیشن غیر ملکی شہریت کے حامل طالبعلموں کے تعلیمی مسائل کو بھی حل کررہا ہے۔ ادارے کی بھر پور کوششوں سے صوبے کے میڈیکل کالجوں میں اوورسیز پاکستانیوں کے بچوں کیلئے اوپن میرٹ کی بنیاد پر 76 نشستیں مختص کردی گئی ہیں۔ پاکستان میں سرمایہ کاری کے لئے اوور سیز پاکستانیوں کی حوصلہ افزائی اور رہنمائی کی جارہی ہے اور ان کے لئے انویسٹمنٹ ہیلپ ڈیسک قائم کیا گیا ہے ۔ اسی طرح پاکستان کے سفارتخانوں میں اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل کے حل کیلئے خصوصی اقدامات کئے گئے ہیں تاکہ دیار غیر میں بسنے والے ان محب وطن پاکستانیوں کو کسی قسم کے مسائل کا سامنا نہ کرنا پڑے۔
ہمیں اس بات کا مکمل ادارک ہے کہ پورے ملک میں صرف پنجاب ہی میں اس طرح کا ادارہ قائم کیاگیا ہے اس لئے وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی ہدایات کے مطابق ہم صرف پنجاب سے تعلق رکھنے والے اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل ہی حل نہیں کرتے بلکہ دیگر صوبوں کے اوورسیز پاکستانیوں کی شکایات وصول کرکے ان کے ازالے کیلئے وفاقی حکومت سے مسلسل رابطے میں بھی رہتے ہیں۔اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل کے فوری حل کیلئے وفاقی حکومت کے اداروں کے ساتھ مؤثر اشتراک کار بھی جاری ہے اوروزیر خزانہ اسحاق ڈار سے مذاکرات کے نتیجے میں ٹیکس معاملات میں تارکین وطن کی معاونت کیلئے ایف بی آر میں فوکل پرسن کی نامزدگی عمل میں لائی گئی ہے ۔مزید براں وفاقی حکومت کے دیگراداروں، اوورسیز پاکستانیز فاؤنڈیشن ،وفاقی محتسب ،نیب اور چیف کمشنر اسلام آباد کے ساتھ بھی اشتراک کار بڑھایاگیا ہے تاکہ تارکین وطن کی وفاقی اداروں سے متعلق شکایات کا جلدازجلد ازالہ یقینی بنایا جاسکے۔ ہماری تجویز پران میں سے متعدداداروں نے اوپی سی پنجاب کے ساتھ تعاون کو فروغ دینے کیلئے فوکل پرسن بھی مقررکردیے ہیں۔
او پی سی پنجاب اگرچہ ایک صو بائی ادارہ ہے لیکن اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل کے حل کے ضمن میں اس کے اقدامات اور مثبت کردار کی پورے ملک میں تعریف کی جارہی ہے۔یہ حقیقت اس وقت کھل کرہمارے سامنے آتی ہے جب ہم کسی ملک میں روڈ شو منعقد کرتے ہیں اور وہاں موجود دیگر صوبوں سے تعلق رکھنے والے بھائیوں سے ملاقات ہوتی ہے۔ان تمام کا یہ مشترکہ موقف ہوتا ہے کہ اوورسیز پاکستانیز کمیشن قائم کر کے وزیراعلیٰ پنجاب نے دیگرتمام صوبوں پرسبقت حاصل کرلی ہے اور خواہش کرتے ہیں کہ دوسرے صوبوں میں بھی ایسے ادارے قائم ہوں۔ او پی سی وزیراعلیٰ پنجاب کے ایک ایسے خواب کی تعبیر ہے جو انہوں نے سمندرپار مقیم پاکستانیوں کی فلاح و بہبود کیلئے دیکھاتھا۔اوورسیز پاکستانیوں کیلئے اس ادارے کے دروازے ہمیشہ کھلے ہیں اور اس ادارے کے افسران و سٹاف ان کی خدمت کیلئے ہمہ وقت مصر وف عمل ہیں۔اوورسیز پاکستانی اپنے مسائل کے حل کیلئے کسی بھی وقت ہمار ی ویب سائیٹ www.opc.punjab.pk یا ہیلپ لائن +92.42.111-672-672 پر 24/7اپنی شکایات درج کراسکتے ہیں۔بذات خود 1 -کلب روڈ جی او آر ون لاہور تشریف لاکریا اضلاع میں موجود ڈسٹرکٹ اوورسیز پاکستانیز کمیٹیوں سے رابطہ کر کے بھی شکایات رجسٹرڈکرائی جا سکتی ہیں۔

مزید :

کالم -