سولر سسٹم سے بجلی لیسکو ہیڈکوارٹرمیں استعمال کی جائے گی، واجدعلی کاظمی

سولر سسٹم سے بجلی لیسکو ہیڈکوارٹرمیں استعمال کی جائے گی، واجدعلی کاظمی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(کامرس رپورٹر)چیف ایگزیکٹو لیسکو سید واجدعلی کاظمی نے جدید ٹیکنالوجی کو الیکٹرک سٹی سسٹم میں مزید فعال بنانے کے وژن پر ایک قدم آگے بڑھاتے ہوئے حال ہی میں لیسکو ہیڈکوارٹر کی چھت پر بجلی پیدا کرنے کا سولر سسٹم لگوایا جس سے پیدا ہونے والی بجلی لیسکو ہیڈکوارٹرمیں استعمال کی جائے گی اور جس وقت بلڈنگ میں بجلی استعمال نہ ہو گی تو یہ بننے والی بجلی عوام کے استعمال کیلئے ڈسٹری بیوشن سسٹم میں چلی جائے گی اس نظام میں بجلی کا میٹر Two Way لگایا جائے گا جو بجلی کے آنے جانے /ڈیبٹ کریڈیٹ کا حساب رکھے گا۔نیپرا نے 2015میں نیٹ میٹرنگ ریگولیشن جاری کی تاکہ سورج کی روشنی کو بڑے پیمانے پر گھریلو سطح پر بجلی پیدا کرنے کیلئے استعمال کیا جا سکے اس موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے لیسکو نے حال ہی میں اپنے ہیڈکوارٹر کی چھت پر 17کلو واٹ کا سولر سسٹم لگایا تاکہ ماحول دوست بجلی کی پیدا وار کی جائے اور اس سے اپنے ملازمین اور صارفین کو تربیت دی جا سکے میسرز ری اون انرجی پرائیویٹ لمیٹیڈنے اس پورے سسٹم کو انسٹال کیا ہے Rene Sola کے 56موڈیولزلگائے گئے ہیں ہر ایک موڈیول کی صلاحیت 300واٹ ہے اور یہ 25سال تک بجلی پیدا کر سکتے ہیں۔Fronius England/Austriaکا DCسے ACانورٹر لگایا گیاہے جس کی صلاحیت 25کلوواٹ ہے اسی انورٹر سے مستقبل میں بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت بڑھائی جا سکتی ہے موڈیولزاور انورٹر دونوں انٹرنیشنل الیکٹروٹیکنیکل کمیشن سے منظور شدہ سٹینڈرڈ کے مطابق ہیں۔شمسی توانائی ماحول دوست اور توانائی کا شفاف ذریعہ ہے خوش قسمتی سے پاکستان میں تقریباً سالانہ 300دن ایسے ہیں جب سورج کی روشنی وافر مقدار میں دستیاب ہوتی ہے جس سے 5سے6کلو واٹ فی گھنٹہ فی مربع میٹر روزانہ بجلی پیدا کی جا سکتی ہے۔
واجدعلی کاظمی