صوابدید تو عدالت عظمیٰ کی ہے لیکن چاہتے ہیں پاناما لیکس کیس کا فیصلہ موجودہ بینچ ہی کرے :عمران خان

صوابدید تو عدالت عظمیٰ کی ہے لیکن چاہتے ہیں پاناما لیکس کیس کا فیصلہ موجودہ ...
صوابدید تو عدالت عظمیٰ کی ہے لیکن چاہتے ہیں پاناما لیکس کیس کا فیصلہ موجودہ بینچ ہی کرے :عمران خان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)چیئرمین تحریک انصاف عمران خا ن نے کہا ہے کہ چاہتے ہیں پاناما لیکس کیس میں سپریم کورٹ کا یہ ہی بینچ فیصلہ کرے لیکن یہ عدالت عظمیٰ کا صوابدید ہے کہ وہ کمیشن بنائے یا خود ہی فیصلہ کرے ۔ان کا کہنا تھا کہ خواجہ اصف اورنوازشریف سن لیں ،ہم پاناماکیس کو نہیں بھولنے دیں گے، اس کیس کے لیے کمیشن کی ضرورت ہی نہیں، کچھ بھی ہوجائے پاناما لیکس کیس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔

”پی آئی اے طیارہ حادثہ پائلٹ کی غلطی کی وجہ سے ہوا“ یہ ’فیصلہ‘ کس نے سنا دیا؟ آپ بھی جانئے
بنی گالا میں میڈیا سے بات چیت میں پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ نوازشریف نے وزیراعظم بن کر پیسا بنایا اور باہر بھجوایا،مریم نواز نے انٹرویو میں کہا کہ ان کی کوئی پراپرٹی نہیں ہے، حکمران تسلیم کرلیں کہ ان کی جائیداد ملک سے باہر ہے۔عمران خان نے کہا کہ وزیراعظم کے وکیل نے کہا کہ وزیراعظم کا پارلیمنٹ میں بیان سیاسی تھا، نوازشریف سے جواب طلب کریں گے ، قوم کو یہ معاملہ نہیں بھولنے دیں گے ،پاناما میں انکشاف کے بعد ان کو یہ جائیداد ماننی پڑی۔انہوں نے کہا کہ کبھی کسی کیس میں اتنی دلچسپی نہیں لی گئی جتنا قوم اس کیس میں لے رہی ہے۔ہماری کوشش ہے کہ پاناما کیس کا جتنا جلدی ممکن ہو فیصلہ ہوجائے،امید کرتے ہیں کہ جنوری کے پہلے ہفتے یہی بینچ اس کیس کو سنے۔عمران خان نے مزید کہا کہ ہماری تمام توجہ سپریم کورٹ میں پاناما کیس پر تھی، اس کیس سے فیصلہ ہوگا کہ کیا طاقتور کے لیے بھی قانون ہے۔

مزید :

قومی -