’میری لمبی عمر کا راز یہ ہے کہ میں خواتین سے۔۔۔‘ 120 سالہ آدمی نے لمبی عمر کا ایسا راز بتادیا کہ دنیا بھر کے مردوں کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے

’میری لمبی عمر کا راز یہ ہے کہ میں خواتین سے۔۔۔‘ 120 سالہ آدمی نے لمبی عمر کا ...
’میری لمبی عمر کا راز یہ ہے کہ میں خواتین سے۔۔۔‘ 120 سالہ آدمی نے لمبی عمر کا ایسا راز بتادیا کہ دنیا بھر کے مردوں کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

نئی دلی (نیوز ڈیسک) لمبی اور صحتمند زندگی پانا ہر انسان کی خواہش ہوتی ہے مگر کم لوگ ہوتے ہیں جن کا یہ خواب حقیقت کا روپ دھار پاتا ہے۔ بھارتی شہر کولکتہ میں مقیم سوامی سیوا نندا بھی ان خوش قسمت لوگوں میں سے ایک ہیں جو 120 سال کے ہوچکے ہیں اور آج بھی ناصرف قابل رشک صحت کے مالک ہیں بلکہ ہر روز گھنٹوں یوگا بھی کرتے ہیں۔ سوامی کی اچھی صحت اور طویل عمر کا راز جاننے کے لئے بہت بار کوشش کی گئی لیکن انہوں نے چپ سادھے رکھی۔ حال ہی میں انہوں نے پہلی بار چپ کا روزہ توڑا اور اپنا راز دنیا کو بتادیا ہے۔ سوامی کا کہنا ہے کہ وہ تمام عمر صنف مخالف سے دور رہے ہیں اور یہی ان کی اچھی صحت اور طویل عمر کا اصل راز ہے، جبکہ مصالحے سے پاک غذا اور پابندی سے یوگا کرنا بھی ان کا معمول رہا ہے۔
سوامی کے پاسپورٹ پر ان کی جائے پیدائش 8 اگست 1896ءدرج ہے، یعنی اس حساب سے وہ دنیا کے طویل العمر ترین زندہ شخص ہیں۔ انہوں نے اپنی ساری عمر ہندو مت کے مقدس شہر وارانسی میں گزاری ہے لیکن گزشتہ کچھ عرصے سے کولکتہ منتقل ہوگئے ہیں۔ بھارت میں انہیں ایک سلیبرٹی کی حیثیت حاصل ہے اور ان کے پرستاروں کی تعداد لاکھوں میں ہے۔

2

بڑے مسلمان ملک میں ہنستے کھیلتے ان تمام بچوں کے ساتھ چند لمحوں بعد کیا دردناک کام کیا جائے گا؟ وہ کام جس سے انسان کی عمر جتنی زیادہ ہو اتنا ہی زیادہ ڈر لگتا ہے
صحت اور طویل زندگی کے موضوع پر گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا ”ضبط ہی زندگی میں سب سے اہم چیز ہے۔ اپنی غذا، ورزش اور جنسی خواہشات کو ضبط میں لاکر انسان جو چاہے فتح کرسسکتا ہے۔ اپنی ضروریات پر قابو پالینا زندگی کی سب سے بڑی کامیابی ہے۔ میں نے ایک صحت مند اور طویل زندگی اسی لئے پائی ہے کہ مادی اشیاءمیرے لئے خوشی کا سبب نہیں ہیں۔ میں ایک بہت غریب گھرانے میں پیدا ہوا اور آج بھی ویسا ہی ہوں۔ آج کے لوگ بہت ناخوش ہیں، ان کی صحت بھی اچھی نہیں اور ان میں دیانت داری بھی نہیں، مجھے یہ دیکھ کردکھ ہوتا ہے۔ ان کے غموں اور بیماریوں کی وجہ مادہ پرستی اور مادی اشیاءمیں خوشیوں کی تلاش ہے۔ “

واضح رہے کہ اپنی طویل عمر اور شاندار صحت کی بدولت سوامی سیوانندا بھارت کے علاوہ بین الاقوامی شہرت بھی رکھتے ہیں، لیکن ان کا طرز زندگی ناقابل یقین حد تک سادہ ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ ساری عمر انہوں نے بستر کا استعمال نہیں کیا بلکہ زمین پر چٹائی بچھا کر سوتے ہیں اور تکیے کی جگہ اینٹ استعمال کرتے ہیں۔ اپنے پرستاروں کے اصرار پر وہ اس بات پر راضی ہوگئے ہیں کہ ان کا نام دنیاکے طویل العمر ترین انسان کے طور پر گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈز میں درج کروایا جائے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -