اسناد فیس وصولی کا بہانہ، تعلیمی بورڈ ملتان کا میٹرک داخلہ فارم لینے سے انکار 

اسناد فیس وصولی کا بہانہ، تعلیمی بورڈ ملتان کا میٹرک داخلہ فارم لینے سے ...

  

ملتان(سٹاف رپورٹر)تعلیمی بورڈ نے پرائیویٹ سکولز کے ساتھ ساتھ سیکڑوں سرکاری سکولز کے میٹرک کے طلبا وطالبات کے داخلہ فارم بھی روک دئیے‘ صورتحال گھمبیرہو گئی‘متاثرہ طلبا وطالبات میں تشویش اور اضطراب کی لہر دوڑ گئی۔(بقیہ نمبر33صفحہ12پر)

بتایا گیا ہے کہ تعلیمی بورڈ ملتان نے12‘11‘2010میں میٹرک کرنے والے طلبا وطالبات سے اسناد فیس کی وصولی کے لئے موجودہ لاکھوں طلبا وطالبا ت کے داخلے روک دئیے ہیں۔ پہلے کوڈ بلاک کئے گئے۔ ساؤتھ پنجاب پرائیویٹ سکولز گرینڈ الائنس و فیڈریشن آف رجسٹرڈ سکولز پنجاب کے احتجاج اور معاملہ میڈیا میں آنے کے بعد کوڈ ڈی لاک کر دئیے گئے مگر اب داخلہ فارم وصول نہیں کئے جا رہے اور کہا جا رہا ہے کہ پہلے 12‘11‘2010میں میٹرک کرنے والے طلبا وطالبات کی اسناد کی فیسیں جمع ہوں گی‘تب ہی میٹرک امتحانات2020کے امیدواروں کے داخلہ فارم جمع ہوں گے۔ اس وقت صورتحال یہ ہے کہ میٹرک کے داخلہ فارم جمع ہونے کی آخری تاریخ قریب آگئی ہے اور داخلہ فارم جمع نہیں کئے جا رہے ہیں۔سیکڑوں سرکاری و پرائیویٹ سکولز کے لاکھوں طلبا وطالبات کے داخلے روکے گئے ہیں۔ساؤتھ پنجاب پرائیویٹ سکولز گرینڈ الائنس و فیڈریشن آف رجسٹرڈ سکولز پنجاب کے چیئرمین فرید خان بنگش نے کہا ہے کہ 250پرائیویٹ سکولز کے داخلے روکے گئے ہیں۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ 12‘11‘2010میں میٹرک کی سند کی فیس نہیں تھی‘یہ بعد میں لاگو کی گئی جبکہ اسناد کئی کئی سال لیٹ کی گئیں اور متاثرہ طلباو طالبات اسناد کے حصول کے لئے تعلیمی بورڈ کے دفتر کے چکر پر چکر لگا کر ہلکان ہو گئے۔‘ اب 9سال کے بعد تعلیمی بورڈ کو یاد آگیا ہے کہ پرائیویٹ سکو لز سے اسناد کی فیسیں وصول کرنی ہیں اور اس کا ملبہ پرائیویٹ سکولز پر ڈال کر میٹرک امتحانات 2020کے بے قصور امیدواروں کو نا حق سزا دی جا رہی ہے اور ان کے داخلہ فارم روک لئے گئے ہیں اور صوبے بھر میں ایسا صرف ملتان بورڈ میں ہے‘ اس سلسلے میں شدید احتجاج کے لئے لائحہ عمل طے کیا جا رہا ہے۔ دوسری طرف سرکاری گرلز و بوائز ہائی و ہائر سیکنڈری سکولز کے سربراہان نے بھی میٹرک کے طلبا وطالبات کے داخلے روکنے پر تشویش ظاہر کی ہے اور اسے تعلیمی بورڈ حکام کا غلط عمل قرار دیدیا ہے اور اعلی ٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ اس صورتحال کا سخت نوٹس لیں اور فوری طور پر طلبا وطالبات کے روکے گئے داخلہ فارم جمع کئے جائیں۔ سرکاری سکولز سربراہان کا کہنا ہے کہ ہم فروغ تعلیم فنڈ(ایف ٹی ایف) یا این ایس بی فنڈ سے یہ رقم ادانہیں کر سکتے۔اعلی ٰ حکام حالات کی سنگینی کا نوٹس لیں اور فوری مداخلت کریں۔اس بارے میں رابطہ کرنے پر تعلیمی بورڈ ملتان کے پبلک ریلیشنز آفیسر الیاس صدیقی نے کہا کہ تقریباً 700سرکاری و پرائیویٹ سکولز کے میٹرک کے طلباوطالبات کے داخلے روکے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ12‘11‘2010میں میٹرک کرنے والے طلباو طالبات کو اسناد 2سے 3سال تاخیر سے ملی تھیں لیکن اب اسناد جلد جاری کی جا رہی ہیں۔ انہوں نے تسلیم کیا کہ میٹرک امتحانات 2020کے امیدوار طلبا وطالبات کا اس معاملے میں کوئی قصور نہیں ہے مگر ان کے داخلے روکنے کا مقصد مذکورہ تعلیمی اداروں کے سربراہان کو یہ احساس دلانا ہے کہ وہ 12‘11‘2010میں میٹرک کرنے والے طلبا وطالبات کی اسناد کی مد میں فیسیں جمع کرائیں‘انہوں نے بتایا کہ اس صورتحال میں آج بھی طلبا وطالبات کے داخلہ فارم جمع نہیں کئے جائیں گے۔

داخلے 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -