کوئٹہ، مقتولہ سحرش کے لواحقین کاگورنر ہاؤس کے سامنے احتجاج جاری

کوئٹہ، مقتولہ سحرش کے لواحقین کاگورنر ہاؤس کے سامنے احتجاج جاری

  

کوئٹہ(آن لائن) ریڈ زون میں مقتولہ سحرش کے لواحقین کاشدید سردی میں احتجاج جاری انتظامیہ سمیت کسی حکومتی اہلکار کو مذاکرات کیلئے جانے کی زحمت نہ ہوئی مقتولہ سحرش کے لواحقین کا ریڈ زون میں گورنر ہاس کے سامنے احتجاج جاری۔ لواحقین کا کہنا ہے کہ 2010میں ہماری ہماری بہن کو مبینہ طور پر اس کے شوہر نے قتل کیا جس کا کیس تاحال عدالت میں چل رہا ہے تفصیلات کے مطابق جبکہ عدالت کے حکم پرگزشتہ روز مقتولہ سحرش کی بیٹی ماریہ کی اس کے والد سے ملاقات کروائی گئی لیکن شام 5 بجے جب ملاقات کا وقت ختم ہوا تو اس کا والد بچی کو لیکر فرار ہوگیا۔مقتولہ کے لواحقین کا کہنا تھا ہمیں تھانوں کے چکر لگوائے جارہے ہیں لیکن ایف آئی آر درج نہیں کی جارہی انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ایف آئی آر درج اور بچی کو واپس کرایا جائے کیونکہ ابھی تک کیس زیر سماعت ہے ہماری نہ صلح ہوئی ہے اور نہ ہی کیس کا فیصلہ ابھی تک ہو پایا ہے۔ مقتولہ کے لواحقین نے الزام لگایا کہ ہمارے مخالفین کو پولیس اور ایک سینیٹر کی حمایت حاصل ہے جس کی وجہ سے پولیس تعاون نہیں کررہی ہے۔

مقتولہ سحرش 

مزید :

علاقائی -