ٰٓایک دوسرے کی خود مختاری کا احترام ضروری، پاکستان خطے میں ترقی کے برابر مواقع پر یقین رکھتاہے: عمران خان 

ٰٓایک دوسرے کی خود مختاری کا احترام ضروری، پاکستان خطے میں ترقی کے برابر ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،این این آئی)وزیراعظم عمران خان نے کہاہے کہ پاکستان خطے میں ترقی کے برابر مواقع پر یقین رکھتا ہے،سارک چارٹر ڈے خطے کی قیادت سے غربت، جہالت اور بیماریوں کے خاتمے کے عزم کی یاد دلاتا ہے، باہمی احترام اور ایک دوسرے کی خود مختاری کا احترام کرتے ہوئے سارک ممالک ترقی حاصل کر سکتے ہیں۔وزیراعظم عمران خان نے 35 ویں سارک چارٹر ڈے پر سارک ممبر ممالک کے عوام کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ پینتیسویں سارک چارٹر ڈے پر سارک ممبر ممالک کی عوام کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ انہوں نے کہاکہ آج کے دن سارک ممالک کے دوراندیش رہنماؤں نے جنوبی ایشیا کی ترقی اور خوشحالی کے لیے ملکر کام کرنے کی غرض سے سارک چارٹر مرتب کیا۔ انہوں نے کہاکہ یہ دن ہماری توجہ اس بڑی ذمہ داری کی طرف مبذول کراتا ہے جو اس خطے میں غربت، جہالت، بیماری اور انڈر ڈویلپمنٹ کے خاتمے کے ضمن میں ہمارے کندھوں پر ہے۔اس موقع پر میں سارک سے پاکستان کی وابستگی کا اعادہ کرتے ہوئے یہ امید ظاہر کرتا ہوں کہ آگے بڑھنے کے اس عمل میں حائل رکاوٹ کو دور کیا جائے گا تاکہ سارک ممالک علاقائی ترقی اور اپنی پوری استعداد کو برؤے کار لانے کے لیے آگے بڑھ سکیں۔انہوں نے کہاکہ پاکستان انفرادی، قومی اور خطے کی ترقی کے علاقائی تعاون کی طاقت پر یقین رکھتا ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان اس امر پر یقین رکھتا ہے کہ برابری اور باہمی عزت کے اصولوں پر کاربند رہتے ہوئے موثر اور نتیجہ خیر علاقائی تعاون کے حصول کو ممکن بنایا جا سکتا ہیدریں اثناز،وزیر اعظم عمران خان(آج) پیر کو نیشنل سائنس و ٹیکنالوجی پارک کا افتتاح کریں گے۔ ذرائع کے مطابق پارک آٹھ شعبوں میں جدت اور تحقیق کے حوالے سے کام کرے گا،ایگریکلچر، آٹو موبائل، انرجی، صحت اور دیگر شعبوں میں تحقیق شامل ہے۔پاکستان انجینئرنگ کونسل نے جدید ٹیکنالوجی لیب کے منصوبے پر کام شروع کردیا،لیب کے قیام کیلئے چائنہ ایسوسی ایشن آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے تعاون کی یقین دہانی کرا دی۔ چیئرمین پاکستان انجینئرنگ کونسل کے مطابق لیب کے قیام کا مقصد ٹیلنٹ پول بنانا ہے، نئے آئیڈیاز اور ایجادات پر کام کرنے کی حوصلہ افزائی کی جائے گی۔وزیراعظم نے پولیو کے خاتمے کے لیے ملک بھر میں 16 دسمبر سے ملک گیر مہم کو یقینی بنانے کے لیے تمام وزرائے اعلی کو اپنے صوبوں میں انسداد پولیو ویکسی نیشن مہم کی قیادت کرنے کی ہدایت کردی۔رپورٹ کے مطابق تمام وزرائے اعلی کو ارسال کیے گئے خط میں وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے انکشاف کیا کہ وزیراعظم عمران خان نے اگست میں قومی ٹاسک فورس برائے صحت کے اجلاس کے دوران تمام وزرائے اعلی کو اپنے متعلقہ صوبوں میں پولیو کے خاتمے کو یقینی بنانے کے لیے اس حوالے سے کوششوں کی تیاریوں کا جائزہ لینے اور مہمات کے افتتاح کرکے قائدانہ کردار ادا کرنے کی ہدایت کی تھی۔انہوں نے کہا کہ اجتماعی کوششوں سے 1990 کے آغاز سے پولیو کیسز کی سالانہ تعداد 20 ہزار سے کم ہو کر گزشتہ برس صرف 12 تک پہنچ گئی تھی لیکن وائرس کے خاتمے کا خواب ابھی تک پورا نہیں ہوا۔ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ بدقسمتی سے 2019 میں ہم نے مجموعی طور پر 91 کیسز کے ساتھ پولیو کی تعداد میں واضح اضافہ دیکھا ہے، جس میں رواں برس خیبرپختونخوا ہ سے 66، سندھ سے 13، بلوچستان سے 7 اور پنجاب سے 5 کیسز رپورٹ ہوئے۔انہوں نے کہا کہ ملک کے مختلف جغرافیائی زونز سے جمع کیے گئے سیویج کے نمونوں میں بڑے پیمانے پر پولیو وائرس پایا گیا اور حکومت اس کے خاتمے میں حائل تمام چیلنجز کو حل کرنے کے لیے عزم پر قائم ہے۔معاون خصوصی نے کہا ہے کہ پہلی ملک گیر انسداد پولیو مہم 16 دسمبر سے شروع ہوگی لہٰذاوزرائے اعلی کو صوبائی ٹاسک فورس برائے صحت کا اجلاس طلب کرنے اور ذاتی طور پر مہمات کی تیاریوں اور افتتاح کا جائزہ لینے کی درخواست کی گئی ہے۔

عمران خان

مزید :

صفحہ اول -