حکمرانوں کی گردن سے تکبر کا سریا نکال دیا، عوام گھبرائیں نہیں انکی کشتی ڈوبنے والی ہے: فضل الرحمن 

  حکمرانوں کی گردن سے تکبر کا سریا نکال دیا، عوام گھبرائیں نہیں انکی کشتی ...

  

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں) جمعیت علماء اسلام (ف) کے امیر مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ ہم نے حکمرانوں کی گردن سے تکبر کا سریا نکال دیا، عوام گھبرائیں نہیں ہماری اس تحریک کا اختتام حکومت کے خاتمے کیساتھ ہی ہوگا، ہم اس ناجائز حکمرانی کو تسلیم کرینگے نہ اسے چلنے دینگے، یہ حکمران پاکستان اور کشمیر کے غدار ہیں، ہم ان غداروں کو پاکستان پر حکومت نہیں کرنے دینگے، پشاور میں متحدہ اپوزیشن کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ یہ پشاور کے اور صوبے کی نمائندے نہیں ہیں یہ اس ملک و قوم کے نمائندہ نہیں ہیں یہ قبضہ گروپ ہے ہم ان کا قبضہ ختم کرینگے، انہوں نے کہا کہ بی آر ٹی منصوبے پر ایک کلو میٹر کی لاگت ڈھائی ارب روپے ہے پتہ نہیں یہ منصوبہ کب تک چلے گا اور کب بنے گا، ملک کا پیسہ اس منصوبے پر ضائع کر دیا گیا ہے، پاکستان کی تاریخ میں جتنے قرضے اس حکومت نے ایک سال میں لیے ہیں ملکی تاریخ کی تمام حکومتوں نے اس کے مقابلے میں یہ بہت زیادہ اور ریکارڈ قرض ہیں، انہوں نے کہا کہ یہ لوگ پاکستان کو کہاں پہنچانا چاہتے ہیں؟ سٹیٹ بنک آف پاکستان پہلی مرتبہ ایک سو ارب کے خسارے میں جارہا ہے، اس مرتبہ ہم پہلی دفعہ ایشین ڈوپلمنٹ بنک سے ایمرجنسی کرائسز لون لے ہیں ورنہ ہمارا ملک چلنے کے قابل نہیں رہا، تنخواہیں دینے کیلئے پیسے نہیں ہیں، ہم بحران قرضے لے رہے ہیں، حکومت کی خارجہ پالیسی ناکام ہو چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ قوم کو کسی سے گھبرانے کی ضرورت نہیں صرف جرات کا مظاہرہ کرنا ہوگا تاکہ اس حکومت سے نجات حاصل کی جا سکے، ہم اس ناجائز حکمرانی کو تسلیم نہیں کرینگے نہ ہی اس چلنے دینگے، مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ حکمرانوں نے کہا کہ ایک ارب درخت لگائے، وہ دکھائیں یہ درخت کہاں لگے ہیں؟ ایک ارب درخت کہاں چلے گئے ہم اس کا حساب لیں گے، 80کروڑ درختوں کا پیسا کہاں لگایا گیا اس کا بھی حساب دینا پڑے گا، انہوں نے کہا کہ اس طرح کی کرپٹ حکومت شاہد زندگی میں نہ آئی ہو، پھچلی حکومت کے قرضوں پر کمیشن بنایا گیا اس کا کیا ہوا؟ کمیشن نے بتایا ہے کہ پھچلی حکومتوں نے پیسا ٹھیک جگہ پر لگا، ہماری حکومت میں لوگ خودکشیاں کر رہے ہیں کون پوچھے گا؟ انہوں نے کہا کہ ہم اس تحریک کو قومی یکجہتی یس اور آگے بڑھائیں گے، اور فتح قریب ہے، ہماری اس تحریک کا اختتام حکومت کے اختتام کیساتھ ہوگا، لہذا قوم کو گھبرانا نہیں جرات کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔

فضل الرحمن

مزید :

صفحہ اول -