”حکومت کے وزراءکو یہ ثابت کرنا پڑے گا کہ وہ اہل مدینہ کی ریاست بنا رہے اور ان کا وہی کردار ہے مدینہ کے لوگوں کا ہوتا تھا“

”حکومت کے وزراءکو یہ ثابت کرنا پڑے گا کہ وہ اہل مدینہ کی ریاست بنا رہے اور ان ...
”حکومت کے وزراءکو یہ ثابت کرنا پڑے گا کہ وہ اہل مدینہ کی ریاست بنا رہے اور ان کا وہی کردار ہے مدینہ کے لوگوں کا ہوتا تھا“

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )چیئرمین نیب جسٹس ریٹائر جاوید اقبال نے کہاہے کہ ریاست مدینہ کے خوبصورت خواب کا کریڈٹ حکومت کو جاتا ہے کہ کم از کم اس نے یہ خواب پیش تو کیا ، خواب دیکھنے کا حق ہم سب کو ہے ،حکومت کے وزراءکو یہ ثابت کرنا پڑے گا کہ وہ اہل مدینہ کی ریاست بنا رہے ہیں اور ان کا وہی کردار ہے جو کہ مدینہ کی ریاست کے لوگوں کا ہوتا تھا۔

چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ریاست مدینہ کے خوبصورت خواب کا کریڈٹ حکومت کو جاتا ہے کہ کم از کم اس نے یہ خواب پیش تو کیا ، خواب دیکھنے کا حق ہم سب کو ہے ، ہم سب کو حق ہے کہ اپنے ارمان رکھیں اور ان کو پورا کریں ،خواب دیکھیں اور ان کی تعبیر لیں ، بعض خوابوں کی تعبیر آپ کو پروردگارکی طر ف سے مل جاتی ہے لیکن کچھ خواب ایسے ہوتے ہیں جن کی تعبیر پانے کیلئے آپ کو محنت کرنی پڑتی ہے ، وہ نہ دھرنوں سے ملتی ہے اور نہ ہی تقاریر سے ، اس کیلئے آپ کو عملی جدوجہد سے کرنا پڑتی ہے ، آپ کو عملی مساوات کا نمونہ پیش کرنا پڑے گا ، حکومت کو خود رول ماڈل بننا پڑے گا ، حکومت کے وزراءکو یہ ثابت کرنا پڑے گا کہ وہ اہل مدینہ کی ریاست بنا رہے ہیں اور ان کا وہی کردار ہے جو کہ مدینہ کی ریاست کے لوگوں کا ہوتا تھا ، وہ ریاست اس لیے کامیاب ہوئی وہاں کالے کو گورے پر کوئی فوقیت نہیں تھی اگر فوقیت تھی تو صرف تقویٰ کی بنیاد پر تھی ۔

مزید : قومی