دعا منگی کا اغوا و رہائی لیکن اغوا کے وقت ساتھ موجود لڑکے نے مزاحمت کی یا نہیں؟ لڑکی کا خاندان دل کی بات زبان پر لے آیا

دعا منگی کا اغوا و رہائی لیکن اغوا کے وقت ساتھ موجود لڑکے نے مزاحمت کی یا ...
دعا منگی کا اغوا و رہائی لیکن اغوا کے وقت ساتھ موجود لڑکے نے مزاحمت کی یا نہیں؟ لڑکی کا خاندان دل کی بات زبان پر لے آیا

  



کراچی (ویب ڈیسک) شہر قائد میں نوجوان لڑکی دعا منگی اغوا ہوئی اور پھر اس کی رہائی بھی عمل میں آچکی ، اس کے اغوا کے وقت ساتھ  حارث نامی لڑکا بھی موجود تھا جسے اغوا کاروں کی طرف سے گولی ماری گئی اور  اس وقت نجی ہسپتال میں زیرعلاج ہے ، اس تمام واقعے میں میڈیا حارث کے بارے میں زیادہ بات نہیں کررہا جبکہ پولیس نے ان سے تحریری بیان بھی لیا ہے جس میں انہوں نے بتایا کہ چار سے پانچ اغوا کار تھے لیکن سوال یہ ہے کہ کیا اغوا کے وقت دعا کیساتھ موجود حارث نے کوئی مزاحمت کی یا نہیں؟ اب دعا کے خاندان نے یہ معمہ حل کرتے ہوئے اس سوال کا جواب بتادیا۔

بی بی سی اردو کے مطابق دعا منگی کے اغوا کے وقت زخمی حارث سومرو اس وقت شہر کے نجی ہسپتال میں زیرِ علاج ہیں، دعا کے ماموں اعجاز منگی کا کہنا ہے کہ حارث نے ایک ہیرو کی طرح مزاحمت کی تھی حکومت اور اداروں کی جانب سے اس کی طرف کوئی توجہ نہیں دی جا رہی ہے نجی ہسپتال میں علاج کی وجہ سے یہ خاندان کافی مشکلات کا سامنا کر رہا ہے۔

پولیس حکام  نے بتایا تھا کہ حارث سومرو جس پستول سے زخمی ہوئے اس گولی کے خول کی فارنسک رپورٹ کے مطابق یہ اسلحہ پہلے کبھی استعمال نہیں کیا گیا تھا۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی