سندھ حکومت سب پر بازی لے گئی،طلباء تنطیموں کو بحال کرنے کا بل منظور کر لیا

سندھ حکومت سب پر بازی لے گئی،طلباء تنطیموں کو بحال کرنے کا بل منظور کر لیا
سندھ حکومت سب پر بازی لے گئی،طلباء تنطیموں کو بحال کرنے کا بل منظور کر لیا

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان  پیپلزپارٹی  کی صوبائی حکومت سب پربازی لے گئی،طالب علموں کادیرینہ مطالبہ پوراکرتےہوئےسندھ کابینہ نے طلبہ تنظیمیں (سٹوڈنٹس یونین)بحال کرنے کا بل منظور کر  لیا،صوبہ  سندھ کے سرکاری و نجی تعلیمی اداروں میں طلباء تنظیموں پر عائد پابندی ختم کر دی گئی،مجوزہ قانون کے مطابق سٹوڈنٹس یونین کا کام سوشل اور اکیڈمک ویلفیئر کو بہتر کرنا ہو گا ۔ 

نجی ٹی وی کے مطابق طلبہ تنظیموں (سٹوڈنٹس یونین) کی بحالی کے منظور کردہ بل 2019 کے تحت کسی بھی تعلیمی و تربیتی ادارے میں بنائی جا سکتی ہیں۔طلبہ تنظیموں کو اس بات کا پابند کیا گیا ہے کہ وہ کسی بھی قیمت پر تعلیمی سرگرمیوں میں رخنہ اندازی نہیں کریں گی اور طلبہ تنظیموں کے مابین نفرت پھیلاناخلاف قانون تسلیم کیا جائے گا۔سندھ کابینہ کی جانب سے منظور کردہ بل کے تحت طلبہ تنظیموں کا اسلحہ رکھنا،اس کا استعمال کرنا اور اسے تعلیمی اداروں میں لانا خلاف قانون تصور کیا جائے گا۔طلبہ تنظیموں سے توقع ظاہر کی گئی ہے کہ وہ تعلیمی ماحول کو بہتر بنانے، نظم و ضبط پیدا کرنے اور غیر نصابی سرگرمیوں کو فروغ دینے میں معاون و مددگار ثابت ہوں گی۔ بل میں واضح کیاگیاہےکہ کوئی بھی طلبہ تنظیم سات سےگیارہ اراکین پر مشتمل ہوگی جسے تعلیمی ادارے کے طلبہ منتخب کریں گے،منتخب  طلبہ تنظیمیں تعلیمی،سماجی اور رفاہی کاموں کو فروغ دیں گی،سندھ کابینہ کی جانب سے منظور کیا جانے والا بل سندھ اسمبلی میں  پیش کر کے قائمہ کمیٹی برائے  قانون کو بھیجا  جائے گا اور تمام متعلقہ اداروں سے مشاورت کے بعد اسے پاس کیا جائے گا۔

یاد رہے کہ طلبہ کی جانب سے تقریباً ایک ہفتہ قبل مختلف شہروں میں کیے جانے والے یکجہتی مارچ کے بعد حکومت سندھ نے صوبہ سندھ میں طلبہ یونین کی بحالی کا اعلان کیا تھا۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...